بچھوﺅں کی اقسام 2 ہزار سے زائد، 800 کا زہر مختلف پروٹینز کا مکسچر ہونے کا انکشاف

بچھوﺅں کی اقسام 2 ہزار سے زائد، 800 کا زہر مختلف پروٹینز کا مکسچر ہونے کا ...
بچھوﺅں کی اقسام 2 ہزار سے زائد، 800 کا زہر مختلف پروٹینز کا مکسچر ہونے کا انکشاف

  


لاہور(آن لائن )عالمی شہرت یافتہ سائنسی فکر کا تحقیقی بلاگ میں اینڈ سائنس کی طرف سے اپنی تازہ تحقیق میں انکشاف کیا گیا ہے کہ دنیا بھر میں بچھوﺅں کی اقسام 2 ہزار سے زائد ہیں جبکہ 800 کے قریب ایسے بچھوبھی ہیں ، جن کا زہر مختلف پروٹینز کا مکسچر ہوتا ہے۔

تحقیقی بلاگ کے مطابق ڈسنے کا فوری احساس اگرچہ کچھ اہلکار ہو سکتاہے تاہم یہ ڈنگ جسم میں مختلف ریکشن کا سبب بن سکتا ہے۔ پروٹین مکسچر والے ڈنگ کے حامل بچھوﺅں کے کاٹنے سے عمومی طورپر کسی خاص جگہ پر سوزش ، جلن یا الرجی وغیرہ ہونے پر لوگ سمجھ نہیں پاتے کہ انہیں کس نے کاٹا ہے ، اور کاٹا بھی ہے یا یہ کوئی جلدی مسئلہ ہے۔

عمومی طور پر بچھوﺅں کے کاٹنے پر جلد پر خارش اور بے چینی ہوتی ہے لیکن اصل وجوہات کا علم نہ ہونے کی وجہ سے متاثرین بروقت طبی امداد حاصل کرنے سے قاصر رہتے ہیں ۔ زہریلے بچھوﺅں کے ڈسنے سے زبان سیاہ، نگلنے میں مشکل ، نظر کا دھندلانا، سرکا چکر انا، بھوک کا احساس اور سانس لینے میں مشکل جیسی علامات واضح ہو سکتی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...