پی آئی اے کارپوریشن آرڈیننس کی سینیٹ سے مسترد ہونے والی قرار داد حرف آخر نہیں :اسحاق ڈار

پی آئی اے کارپوریشن آرڈیننس کی سینیٹ سے مسترد ہونے والی قرار داد حرف آخر نہیں ...
پی آئی اے کارپوریشن آرڈیننس کی سینیٹ سے مسترد ہونے والی قرار داد حرف آخر نہیں :اسحاق ڈار

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ سینیٹ میں پی آئی اے کارپوریشن آرڈیننس مسترد کرنے کی قرار دادحرف آخر نہیں ہے بلکہ اور بھی کئی راستے ہیں ۔ایسی قرار داد لانے والی سوچ کی مذمت کرتا ہوں ۔ان کا کہنا تھا کہ ہم نے پی آئی اے کو آزاد کیا ،آ رڈیننس کے ذریعے پی آئی اے میں کوئی تبدیلی نہیں لائی گئی ،پی آئی اے میں جو بہتری آئی ہے اسے مزید با اختیار بنانے کے لیے قانون ضروری تھا۔انہوں نے کہا کہ اگر نجکاری کرنا ہوتی تو یہ قانون لانے کی ضرورت نہیں تھی ۔

سینیٹ کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے اسحاق ڈار نے کہا کہ یہ اچھی روایت قائم نہیں ہوئی ، قومی اسمبلی اور سینیٹ کی کمیٹیاں بنا کر قرار داد لانے کی کیا ضرورت تھی ،ہمیں میثاق معیشت کی ضرورت ہے ،معیشت کو سیاست سے الگ کریں ۔اسحاق ڈار نے کہا کہ ہم قومی اسمبلی سے آرڈیننس منظور کر کے سینیٹ میں لاسکتے تھے ،سینیٹ سے مسترد ہونے پر اسے مشترکہ اجلاس میں لے جا سکتے تھے ،ہم نے ایسا نہیں کیا لیکن کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ایسا کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ آج آپ لوگوں نے پی آئی اے کو بیور و کریٹ کے کنٹرول میں دے دیا اور پی آئی اے کی آزادی کو روند ڈالا ہے ۔انہوںنے مزید کہا کہ مشاورت اور بات چیت سے قرار داد سے نکلنے کا آئینی راستہ ڈھونڈ لیں گے ۔

مزید : قومی


loading...