کپاس کو آلودگی سے پاک کرنے کیلئے عالمی نکات پر عمل خوش آئند: برآمد کنندگان

کپاس کو آلودگی سے پاک کرنے کیلئے عالمی نکات پر عمل خوش آئند: برآمد کنندگان

  



لاہور(آن لائن)برآمدکنندگان نے کہا ہے کہ کپاس کو آلودگی سے پاک کرنے کے لئے عالمی 16مطالبات پر عمل کرنا شروع کرنا خوش آئند ہے ، محکمہ زراعت کے ان اقداما ت کے بہترین نتائج برآمد ہوئے ہیں ، اس حوالے سے محکمہ زراعت نے کپاس چنے والی خواتین کوتربیت فراہم کی ہے جس کے بعد چنائی کا عمل بہتر ہوا ہے ،ٹیکسٹائل پیدا کر نے والے ممالک کی بین الاقوامی تنظیم (آئی ٹی ایم ایف ) کے مطابق کپاس کی آلودگی کے 16 اجزا ہیں جن میں پلاسٹک ،سوت، پتے،کاغذ ، کھوکھڑی، چمڑا، پرندوں کے پر،ریت مٹی، زنگال، دھات، تار، گریس، تیل، ربڑ اور مہر کا رنگ وغیرہ شامل ہیں جنکی موجودگی کے تناسب کی بنیاد پر کپاس کا معیار وضع کیا جاتا ہے۔کپاس کی آلودگی کے اسباب میں کپاس کی چنائی کر نے والی غیر تربیت یافتہ خواتین(چونیاں)،چنائی کا معاوضہ وزن کی بنیاد پر دیا جاتا ہے جس سے غیر معیاری اور آلودہ کپاس چننے والوں کی حوصلہ افزائی ہوتی ہے کیونکہ آلودہ کپاس چننے میں محنت بھی کم لگتی ہے اور زیادہ وزن کی وجہ سے معاوضہ بھی زیادہ ملتا ہے ۔دوران ترسیل سوت یا پلاسٹک کی چادروں کا استعمال شامل ہے ،برآمدکنندگان نے مزید کہا کہ ان اسباب کو ختم کرنے کے لئے محکمہ زراعت ہر سطح پر کام کررہا ہے ۔اس طرح کے اقدامات سے کپاس کی قیمت زیادہ ملے گی اور دنیا بھر میں پاکستانی مانگ میں اضافہ ہوگا ۔

مزید : کامرس


loading...