2017ٹیکسٹا ئل سیکٹر کیلئے بھاری رہا‘ حکو متی پا لیسیاں کیلئے فائدہ مند ثابت نہ ہوئیں

2017ٹیکسٹا ئل سیکٹر کیلئے بھاری رہا‘ حکو متی پا لیسیاں کیلئے فائدہ مند ثابت ...

  



فیصل آباد ( آن لائن )2017ٹیکسٹا ئل سیکٹر کے لیے بھاری رہا حکو مت کی ٹیکسٹا ئل پا لیسی انڈسٹری کے لیے زہر قا تل ثا بت ہو ئی50 سے زا ئد ہزار پاور لومز فیکٹر یاں مستقل طور پر بند ہو گئی ٹیکسوں کی بھر مار رہی برآمدات میں 7ارب ڈا لر سے زائد کی کمی ہو ئی لا کھوں پاور لومز ورکرز بے روز گار 2500 چھوٹے بڑے کار خا نے گو مگو کی کیفیت میں مبتلا ٹیکسٹا ئل ایسوسی ایشنز واویلا کر تی رہیں حکومت کے کسی ذمہ دار نے نہ سنی 4سال تک ٹیکسٹا ئل کا وفا قی وزیر نہیں بنا یا گیا پیداواری لا گت میں اضا فہ ہو نے سے انٹر نیشنل مارکیٹ میں پاکستا نی مصنوعات کی ڈیما نڈ کم ہو ئی فا ئدہ بھارت چین بنگلہ دیش سری لنکا نے اٹھا یا تفصیل کے مطا بق 2017پاکستان کے ٹیکسٹا ئل سیکٹر کے لیے بھاری رہا مو جودہ حکو مت 4سال تک ٹیکسٹا ئل سیکٹر کے لیے کو ئی وزیر مقرر کر نے میں مکمل طور پر ناکام رہی ٹیکسسز کی بھر مار نے ٹیکسٹا ئل مصنوعات کی پیداواری لا گت میں اضا فہ ہوا سو تی دھا گے کی قیمتوں میں من مرضیاں ہو تی رہی بجلی اور گیس کے ٹیرف ریٹ میں پنجاب کی انڈسٹری پر مختلف موقعوں پر بم گرا ئے گئے ٹیکسٹا ئل سے وابسطہ مختلف ایسوسی ایشنز واویلا کر تی رہیں مگر حکو مت کے کان جوں نہیں رینگی جس کی وجہ سے 2500سے زا ئد چھوٹے بڑے پاورلومز اور اس سے وابسطہ کار خا نے گو مگو کی کیفیت میں مبتلا ہو ئے 50سے زا ئد فیکٹر یاں مستقل طور پر بند ہو گئی جس سے لا کھوں پاور لومز ورکر اس شعبے منسلق افراد اور ڈیلی اجرت پر کام کر نے والے مزدور بے روز گار ہو ئے حکو مت کے پاس بے روزگار ہو نے والوں کے لیے روزگار مہیا کر نے کے لیے دوسرا کو ئی سیکٹر نہیں توا نا ئی کے ٹیرف ریٹ میں اضافے اور ٹیکسسز میں بے اضا فے کے سا تھ ساتھ پنجاب کی انڈسٹری کے سا تھ سو تیلی ماں جیسے سلوک نے ٹیکسٹا ئل مصنوعات کی پیدا واری لا گت میں ہو شر با اضا فہ ہوا جس کی وجہ سے انٹر نیشنل مارکیٹ میں دیگر ہمسا یہ ممالک کی مصنوعات کا مقا بلہ کر نا بر آمد کندگان کے بس میں نہ رہا بر آمد کندگان کی عدم دلچسپی کی وجہ سے برآمدات میں 7کروڑ ڈالر کی کمی ہو ئی پیدا واری لا گت میں اضا فے کا بھر پور فا ئدہ بھارت ،بنگلہ دیش،چا ئنہ،اور سری لنکا سمیت سو یٹ یو نین نے اٹھا یا ۔

متعدد آرڈرز یہ مما لک لے اڑیپا کستان زرعی ملک ہو نے کے باوجود محکمہ زراعت کپاس کے کاشتکار کو کم لا گت میں تیار ہو نے کپاس کی نئی اقسام دریافت کر نے میں مکمل طور پر ناکام رہا جس کی وجہ سے ٹیکسٹا ئل سیکٹر کروڑوں ڈا لر کی مہنگی کا ٹن امپورٹ کر نے پر مجبور ہوا جس کا نقصان امورٹرز اور پاکستان کو بھی ہوا ٹیکسٹا ئل سے وابسطہ ایسوسی ایشنز کے مطا بق ٹیکسٹا ئل سیکٹر کے لیے مشکل ترین پا لیسیاں بنا نے کے ذمہ دار وفاقی وزیر خزا نہ اسحاق ڈار ہیں جنہوں نے سا بق وزیر اعظم میاں نواز شریف کے 180ارب روپے کے ریلیف پیکج پر عملدرآمد نہ کیا ۔۔#/s#

*****

30-12-17/--112

مزید : کامرس


loading...