جنوبی پنجاب میں سورج مکھی کا شت کرنے کے رجحان میں اضافہ

جنوبی پنجاب میں سورج مکھی کا شت کرنے کے رجحان میں اضافہ

  



لاہور ( این این آئی)جنوبی پنجاب میں سورج مکھی کا شت کرنے کے رجحان میں اضافہ ہونے لگا ،کسان اب کم آمدن والی فصلوں کو ترک کرکے سورج مکھی کاشت کرنے کی منصوبہ بندی میں مصروف ہیں ۔ زرعی ماہرین کے مطابق جو کسان گندم کاشت نہیں کرسکے ہیں وہ جنوری میں سورج مکھی کی کاشت کرنے کے لئے تیاریوں میں مصروف ہیں ،سورج مکھی پر بھاری سبسڈی سے کسان کو غیر معمولی اضافہ ہوگا ، ذرائع کے مطابق سورج مکھی کی فصل خوردنی تیل کی ملکی پیداوار بڑھانے میں اہم کردار ادا کر تی ہے۔ اس کے بیج میں اعلٰی قسم کا 40فیصد سے زیادہ خورد نی تیل ہوتا ہے۔ اس سے حاصل ہونے والا تیل انسانی صحت بالخصوص امراض قلب سے بچاؤ کے لئے نہایت مفید ہے۔ مزید براں اس کے تیل میں ضروری حیاتین " اے"َ ، " بی" اور " کے" پائے جاتے ہیں ۔ یہ فصل تقریباً 110 تا 130 دنوں میں پک کر تیار ہوجاتی ہے۔خادم پنجاب کسان پیکج کے تحت سورج مکھی کی منافع بخش کاشت کے فروغ کے لیے کروڑوں روپے سبسڈی کی فراہمی ۔رجسٹرڈ کسانوں کو سورج مکھی کی کاشت پر بذریعہ واؤچر 5000 روپے فی ایکڑ سبسڈی فراہم کی جائے گی۔

اس منصوبہ کے تحت رجسٹرڈ کسانوں کو سورج مکھی کی کاشت کے لیے 10 ایکڑ تک سبسڈی مہیا کی جائے گی۔ سورج مکھی کی بوری سے ملنے والے واؤچر کا نمبر اپنے شناختی کارڈ کے ہمراہ 8070 پر بھیجیں اور تصدیقی SMS موصول ہونے پر قریبی موبائل شاپ سے فوری 1000 روپے حاصل کریں۔ بقایا رقم فصل کی کٹائی پر موصول ہونے والے SMSکی بنیاد پر حاصل کریں۔ سورج مکھی کی منافع بخش کاشت سے نہ صرف کسان خوشحال ہو گا بلکہ خوردنی تیل کی ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے ساتھ ساتھ کثیر زر مبادلہ کے حصول سے ملکی معیشت مستحکم ہو گی ۔ حکومت پنجاب اور اے پی ایس ای اے کے مشترکہ تعاون سے علاقائی سطح پر فصل کے خریداری کے مراکز کا قیام بھی عمل میں لایا جا رہا ہے۔ سورج مکھی کی 2500روپے فی من فروخت میں کمی بیشی کو مد نظر رکھتے ہوئے کاشتکار کی مالی معاونت بھی کی جائے گی۔

مزید : کامرس


loading...