پاکستان کا گرفتار اغوا کا رتک رسائی دینے سے انکار امریکہ کا فوجی امداد روکنے پر غور

پاکستان کا گرفتار اغوا کا رتک رسائی دینے سے انکار امریکہ کا فوجی امداد روکنے ...

  



واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) ’’نیویارک ٹائمز‘‘ نے دعویٰ کیا ہے کہ موجودہ سال کے آغازمیں پاکستان نے جب ایک کینیڈ ین امریکن فیملی کو اغوا کاروں سے آزاد کرایا تھا تو ایک اغوا کار کو پکڑلیا تھا لیکن جب امریکہ نے اس اغوا کار کو اس کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا تو پاکستان نے ایسا کرنے سے انکار کردیا۔ تازہ اشاعت میں اخبار نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ اس اغوا کار کا تعلق حقانی نیٹ ورک سے ہے اور یہ معاملہ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں اختلافات کا ایک حصہ ہے،پاکستان کے اس مبینہ ’’عدم تعاون‘‘ کی وجہ سے امر یکہ ساڑھے پچیس کروڑ ڈالر کی امداد کو روکنے پر غور کر رہا ہے جو کانگریس منظور کرچکی ہے۔ ٹرمپ انتظامیہ کے اندر فی الحال یہ بحث جاری ہے کیا پاکستان کے غیر اطمینان بخش رویئے کی وجہ سے امریکہ یہ امداد دینے سے پوری طرح انکار کرے یا نہیں؟ رپورٹ میں لکھا گیاہے کہ امریکہ اور پاکستان کے تعلقات دونوں کیلئے بہت اہم ہیں اور یہ صدر ٹرمپ کے جنوبی ایشیا کی حکمت عملی کے حالیہ اعلان کے بعد مسلسل خر ا بی کی طرف جا رہے ہیں۔ اگست میں جاری کردہ پالیسی میں صدر نے الزام لگایا تھا ’’پاکستان افراتفری، تشدد اوردہشت گردی کے ایجنٹوں کو محفوظ پناہ گاہیں فراہم کر رہا ہے‘‘۔ امریکہ 2002ء کے بعد سے اب تک پاکستان کو 33 ارب ڈالر امداد دے چکا ہے اور صدر نے خبر دار کیا تھااگر پاکستان نے ان دہشت گردوں کیخلاف کارروائی نہ کی تو وہ اس کی موجودہ ساڑھے پچیس کروڑ ڈالر کی امداد روک لے گا۔ ماہ رواں میں ٹرمپ انتظامیہ کے سینئر حکام نے اس امداد کے مستقبل کا فیصلہ کرنے کیلئے ایک اجلاس میں طے کیا تھا کہ آئندہ چند ہفتوں میں اس کے بارے میں حتمی فیصلہ کرلیا جائے گا۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے پاکستانی فوج نے جمعرات کو امریکہ کو ایک سخت وارننگ جاری کی تھی کہ وہ اپنی سرزمین پر موجود مسلح گروہوں کیخلاف سخت کارروائی کرے گا۔ فوجی ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے اس الزام کو رد کردیا کہ پاکستان دہشت گرد گروہوں کیخلاف مناسب کارروائی نہیں کر رہابلکہ واضح کیا ہے پاکستان خود اپنے مفاد میں مسلح گروہوں کیخلاف کارروائی کا سلسلہ جاری رکھے گا اور اس کیلئے اسے دوسرے ممالک کی ہدایت کی ضرورت نہیں ہے۔

امریکہ امداد

مزید : علاقائی


loading...