ترقیاتی سکیموں کا معیار یقینی بنایا اور منصوبوں کی کڑی نگرانی کی جائے: خرم دستگیر

ترقیاتی سکیموں کا معیار یقینی بنایا اور منصوبوں کی کڑی نگرانی کی جائے: خرم ...

  



گوجرانوالہ(بیورو رپورٹ)وفاقی وزیر دفاع انجینئر خرم دستگیر خان نے کہا ہے کہ جاری ونئی ترقیاتی سکیموں کے معیار کو یقینی بنانے اور منصوبوں کو مفاد عامہ کے لیے بر وقت مکمل کرنے کے لیے انکی کڑی نگرانی کی جائے تا کہ عوام ان منصوبوں سے بھر پور استفادہ حاصل کر سکیں۔ اس ضمن میں پارلیمنٹرینز کو بھی آن بورڈ لیں اورمعزز ارکان اسمبلی کی مشاورت سے ترقیاتی سکیموں کی از سر نو ترجیحات کا تعین کیا جائے،جن سکیموں کے ٹینڈر جاری ہو چکے ہیں اور فنڈز بھی موصول ہو چکے ہیں انکی تکمیل میں تا خیر ہر گز برداشت نہیں کی جائے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈی سی آفس میں ڈسٹرکٹ کو آرڈینیشن کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ڈپٹی کمشنر سہیل احمد ٹیپو بھی انکے ساتھ تھے ۔ ارکان صوبائی اسمبلی عبدالرؤف مغل ،چو دھری محمد اقبال گجر،توفیق احمد بٹ،قیصر اقبال سندھو،چو دھری اختر علی خان ،شوکت منظور چیمہ،رفاقت علی گجر،ڈپٹی ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ ڈاکٹر غیاث النبّی ،ڈائریکٹر واسا فدا حسین،ایم ڈی جی ڈبلیو ایم سی مہران افضل کے علاوہ دیگر متعلقہ محکموں کے افسروں نے اجلاس میں شرکت کی ۔ڈپٹی کمشنر سہیل احمد ٹیپو نے کہا کہ ضلع بھر میں جاری و نئی ترقیاتی سکیموں کی بروقت اور معیاری تکمیل ہر صورت یقینی بنائی جائے۔متعلقہ ممبران اسمبلی سے بھی مشاورت کی جائے تا کہ مل جل کر مشترکہ اشتراک عمل سے مفاد عامہ کے منصوبوں کو پایائے تکمیل تک پہنچایا جا سکے ۔ افسر روایتی سستی کو چھوڑ کر ترقیاتی سکیموں پر کام کی رفتار تیز کریں اس ضمن میں غفلت و کوتاہی ہر گز برداشت نہیں کی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ خرم دستگیر خان کی ہدایت کی روشنی میں شہریوں کے وسیع تر مفاد کی ترقیاتی سکیموں کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے گا اور اس میں کوئی کسر اُٹھا نہ رکھی جائے گی ۔اجلاس میں نئی سکیموں کی منظوری بھی دی گئی اور اس امر پر زور دیا گیا کہ ترقیاتی سکیموں پر کام کی رفتار تیز کی جائے تا کہ انکی جلد تکمیل عمل میں لائی جاسکے۔اجلاس میں بتایا گیا کہ 2017-18کی پراونشل اے ڈی پی کی 329سکیمزپر 63614ملین روپے لاگت آئے گی جبکہ 16881ملین روپے خرچ کیے جا چکے ہیں ۔ان میں 114جاری سکیمیں ہیں اور 215نئی سکیمیں شامل ہیں ۔ اس طرح مختلف محکموں کے زیر اہتمام سیکٹر وائز سکیموں میں روڈز کی تعمیر کی 25جاری اور 21نئی سکیمیں جاری ہیں ۔ہائی وے ڈویژن کی 9جاری اور 2نئی سکیمیں، جی ڈی اے کی 1جاری اور 3نئی سکیمیں ،اس طرح مجموعی طور پر 61سکیمز پر 16138ملین روپے لاگت آئے گی اور 8478ملین روپے جون 2017کے لیے مختص کیے گئے تھے اور ان کی فزیکل پراگریس 71%ہے اس طرح شعبہ صحت ، پبلک بلڈنگز ،سپورٹس ، ایمرجنسی سروسز،سپیشل پروگرام کے تحت 40جاری و نئی سکیموں پر 7970ملین روپے لاگت آئے گی اور ان پر جون 2017تک 3402ملین روپے خرچ کیے جا چکے ہیں اور ان کی فزیکل پراگریس 42%ہے ۔ محکمہ سکول ایجوکیشن کی 9جاری سکیمز اور 44نئی سکیموں کے لیے 846ملین روپے مختص کیے گئے اور 81ملین روپے خرچ ہوئے اور اس کی فزیکل پراگریس 11%ہے ۔محکمہ بلڈنگ ۱۱ کے زیر اہتمام محکمہ ہائیر ایجوکیشن اور سپیشل ایجوکیشن کی 13نئی و جاری سکیموں کے لیے 1071ملین روپے مختص کیے گئے اور جون 2017تک .467ملین روپے خرچ کیے گئے انکی فزیکل پراگریس 27%ہے ۔

خرم دستگیر

مزید : صفحہ آخر


loading...