2018ء میں عام انتخابات ہوتے نہیں دیکھ رہا، مخدوم خسرو بختیار

2018ء میں عام انتخابات ہوتے نہیں دیکھ رہا، مخدوم خسرو بختیار

  



خان پور (تحصیل رپورٹر) معروف سیاستدان و ممبر قومی اسمبلی مخدوم خسرو بختیار نے کہا ہے کہ مجھے 2018 کے انتخابات ہوتے نظر نہیں آرہے ۔ اللہ تعالیٰ پاکستان کو سلامت رکھے ۔ (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

پاکستان کی سلامتی ہر چیز سے زیادہ اہمیت رکھتی ہے ۔ وہ سابق چیئرمین یونین کونسل سید محمد نواز شاہ کی وفات پر اظہار تعزیت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر انتخابات ہوئے تو میں اپنے حلقہ احباب سے مشاورت کے بعد کی سیاسی جماعت یا آزادانہ انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی اور علاقائی صورت حال گھمبیر ہے اور اس قسم کی صورتحال میں انتخابات کا ہوجانا ایک معجزہ ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ میرے پورے حلقہ انتخابات میں سڑکوں کا جال بچھا دیا گیا ہر جگہ سکول تعمیر ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اب نواں کوٹ میں کالج کے قیام کی منظوری حاصل کرلی ہے اور یہ کالج نوازشاہ کے نام سے منسوب کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ سابق ممبر پنجاب اسمبلی سید محمد عظیم شاہ ، ان کے صاحبزادے محمد نوازشاہ کی شناخت شرافت ہے یہ سید خاندان ہے اور انہوں نے ہمیشہ شرافت کو فروغ دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گل حسن شاہ نے سیاست میں حصہ لیا تو ان کی بھرپور مدد کی جائے گی ۔ اس موقع پر سابق تحصیل ناظم سید مرتضیٰ شاہ، عنایت شاہ ، فدا حسین شاہ ، زبیر شاہ ، عمیر شاہ ، پومی شاہ ، خالد خان لنڈ ، جام عیسیٰ ، صابر خان کورائی ، رشید احمد ، محمد صدیق کورائی ، ذوالفقار ، شاہد حبیب جتوئی ، عاشق پیر زادہ ، جبار لاٹکی ، منظور خان لبانہ ، جام عبدالمجید جاوید ، نذر خان چاچڑ کے علاوہ دیگر افراد موجود تھے ۔

خسرو بختیار

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...