سال 2017ء میں تعلیمی بورڈ کی کارکردگی ناقص، بوٹی مافیا بے لگام

سال 2017ء میں تعلیمی بورڈ کی کارکردگی ناقص، بوٹی مافیا بے لگام

  



ملتان( جنرل رپورٹر) سال 2017 ء میں تعلیمی بورڈز کی کارکردگی بھی امتحانات کے انعقاد اور دیگر امتحانی معاملات کے حوالے سے ناقص رہی۔بوٹی مافیا بے لگام رہا۔گڈ گورننس کا یہ عالم رہا کہ سارا سال صوبہ پنجاب کے سات تعلیمی بورڈز میں چئیرمینوں کی تقرری نہ ہو سکی۔ملتان بورڈ میں کنٹرولر امتحانات پروفیسر حیدر گردیزی اور سیکریٹری بورڈ پروفیسر ارشد جاوید اعوان کی کنٹریکٹ کی مدت ختم ہو گئی مگر(بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

ان دونوں افسران کو ایک ایک ماہ کی توسیع دی جاتی رہی پھر سیکرٹری بورڈ مذکور مدت ملازمت پوری ہونے پر ریٹائرڈ ہو گئے تو چئیرمین بورڈ نے ریٹائرڈ ہونے والے سیکرٹری کو اسی بورڈ میں آفیسر کانفیڈنشل پریس تعینات کیا۔اس سال میں ملتان بورڈ میں میٹرک میں اعلیٰ نمبر لینے والے طلبہ کو اعلان کے باوجود لیپ ٹاپ نہ ملے۔میٹرک امتحانات 2010 تا 2012 پاس کرنے والے متعدد طلبہ اورسال 2016 و 2017 کے طلبہ کو اسناد نہ مل سکیں۔تاہم ملتان بورڈ میں ون ونڈو سکیم شروع ہوئی۔اور کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں بہتری لائی گئی۔داخلہ فارم آن لائن کرنے کا عمل مزید بہتر کیا گیا۔امتحانی گزٹ سسٹم ختم کرکے نتائج آن لائن کئے گئے۔تاہم بورڈ کا اپنا ملٹی پرپز ہال تعمیر نہ ہو سکا۔اس سال بھی امتحانات میں نقل اور امپرسونیشن (اصل امید وار کی جگہ نقلی امیدوار) کا خاتمہ نہ ہو سکا۔

بورڈ کار کردگی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...