بیٹا قتل ‘ 4 سال سے انصاف کی تلاش ‘ کوئی تو سہارا دے ‘ حاجی دلدار ‘لاہور میں مظاہرہ

بیٹا قتل ‘ 4 سال سے انصاف کی تلاش ‘ کوئی تو سہارا دے ‘ حاجی دلدار ‘لاہور میں ...

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)سابق گورنر ملک غلام مصطفی کھر کے بیٹے کے ہاتھوں قتل ہونے والے مقتول نوجوان کے لواحقین نے سپریم کورٹ کے باہرمظاہرہ کیا۔ تفصیل کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں گزشتہ روز چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے مختلف مقدمات کی سماعت (بقیہ نمبر13صفحہ12پر )

کی۔ اس موقع پر بہت سے سائل انصاف کے حصول کے لیے اپنی اپنی شکایات لے کر عدالت پہنچے اور عدالت سے نوٹس کا مطالبہ کیا۔ ایک مقتول نوجوان کے لواحقین نے بھی سپریم کورٹ کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا اور سابق گورنر مصطفی کھر کے بیٹے بلال مصطفی کھر پر قتل کا الزام لگایا۔مقتول کے والدحاجی دلدار لدھانی نے کہا کہ کوٹ ادو میں ساڑھے چار سال قبل میرے بیٹے امجد کو میری آنکھوں کے سامنے قتل کر دیا گیا، سابق گورنر پنجاب مصطفی کھر کے بیٹے اور سابق ایم پی اے بلال مصطفی کھر نے میرے بیٹے کو قتل کیا۔ ساڑھے چار سال سے انصاف کے لیے دربدر بھٹک رہے ہیں لیکن کہیں شنوا?ی نہیں ہو رہی۔ مظاہرین نے چیف جسٹس سے انصاف کی اپیل کی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...