آر ایل این جی سے بجلی کی پیداوار میں 30فیصد اضافہ متوقع ، وزارت توانائی

آر ایل این جی سے بجلی کی پیداوار میں 30فیصد اضافہ متوقع ، وزارت توانائی

کراچی (اکنامک رپورٹر )آر ایل این جی کے استعمال سے بجلی کی پیداوار میں30فیصد اضافہ متوقع ہے اور رواں سال کے اختتام تک بجلی کی پیداوار اور رسد125 ارب یونٹس تک پہنچ جائے گی۔ وزارت توانائی( پاور ڈویڑن) کی رپورٹ کے مطابق سال2014 ء کے دوران بجلی کی پیداوار 96ارب یونٹس رہی تھی جبکہ سال2015ء کی پہلی سہ ماہی کے دوران بجلی پیدا کرنے کیلئے آر ایل این جی کے استعمال سے سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران بجلی کی پیداوار میں2.49 فیصد کے اضافہ سے پیداوار98 ارب یونٹس تک بڑھ گئی۔رپورٹ کے مطابق سال 2016ء کے دوران پیداوار میں6.04 فیصد کا اضافہ ہوا اور پیداوار104 اری یونٹس تک پہنچ گئی۔ اسی طرح بجلی پیدا کرنے کیلئے آر ایل این جی کے زیادہ استعمال اور تھرمل ذرائع سے چلنے والے پلانٹس کی آر ایل این جی پر منتقلی سے پیداوار میں9.67 فیصد اضافہ ہوا جس سے آر ایل این جی سے بجلی کی پیداوار114 ارب یونٹس تک بڑھ گئی۔رپورٹ کے مطابق ری گیسی فیکیشن کی موجود دو فلوٹنگ سہولیات کی استعداد1.2 ارب کیوبک فٹ روزانہ ہے جن کی مدد سے درآمد کی گئی ایل این جی کو گیس کے نیٹ ورک میں شامل کیاجاسکتا ہے۔رپورٹ کے مطابق پاکستان میں بجلی کی پیداوار میں اضافہ کے حوالے سے آر ایل این جی کا کردار نمایاں ہے اور بجلی کی پیداوار میں ہونے والے دس ہزار میگاواٹ کے اضافہ میں آر ایل این جی سے حاصل شدہ پیداوار کا حصہ6745 میگاواٹ ہے۔ رپورٹ کے مطابق بجلی پیداوار کرنے والے پاور پلانٹس آر ایل این جی کے بڑے صارف ہیں جن کا حصہ42 فیصد جبکہ گھریلو صارفین اور کھاد تیار و برآمد کرنے والے اداروں کا حصہ21 فیصد کے قریب ہے۔

مزید : کامرس


loading...