افغان طالبان نے کابل حکومت کی مذاراتی پیشکش مسترد کر دی ، امریکہ سے آئندہ ماہ سے ریاض میں بات چیت ، مصالحتی عمل بڑھانے کااعلان

افغان طالبان نے کابل حکومت کی مذاراتی پیشکش مسترد کر دی ، امریکہ سے آئندہ ماہ ...

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) افغان طالبان نے کابل حکومت سے مذاکراتی عمل کو مسترد کرتے ہوئے آئندہ ماہ ریاض میں امر یکہ سے مذاکرات کا اعلان کیا ہے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان طالبان نے صدر اشرف غنی کی امن کی مذاکرات کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے کسی ایسے مذاکراتی عمل میں حصہ نہ بننے کا فیصلہ کیا ہے جس میں کابل حکومت کے نمائندے بھی موجود ہوں ۔ ا فغا ن طالبان نے دبئی میں ہونیوالے مذاکرات کے تسلسل کو جاری رکھنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے آئندہ ماہ سعودی عرب میں ہونیوالے امن مذاکرات میں امریکی وفد سے مصالحتی بات چیت کو مزید آگے بڑھایا جائے گا۔افغان طالبان کے ترجمان نے مزید بتایا امریکہ سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز کو اپنے فیصلے سے آگاہ کردیا ہے اور امید کرتے ہیں تمام اسٹیک ہولڈرز ہماری خواہش کا احترام کرتے ہوئے کابل حکومت کو مذاکراتی عمل سے دور رکھیں گے،افغان حکومت سے باقاعدہ بات چیت نہیں کی جائیگی۔ طالبان، امریکہ اور دیگر علاقائی ممالک کے وفود کے درمیان ایک ملاقات رواں ماہ متحدہ عرب امارات میں ہوئی تھی۔ طالبان کے مطابق اس ملاقات میں نامکمل رہ جانے والی بات چیت کو سعودی عرب میں آ گے بڑھایا جائے گا۔ طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کے مطابق کسی بھی ثانوی بات چیت سے قبل امریکا کے ساتھ معاہدہ ضروری ہے۔واضح رہے کہ رواں ماہ دبئی میں طالبان نمائندوں، امریکا، متحدہ عرب امارات، سعودی عرب اور پاکستان کے وفد کے درمیان افغانستان میں جاری 17 سالہ جنگ کے خاتمے کے لیے مذاکرات ہوئے تھے جس کے لیے حتمی ملاقات جنوری 2019 میں سعودی عرب میں ہونا ہے۔

افغان طالبان

مزید : صفحہ اول


loading...