فلیگ شپ ریفرنس میں نیب نوازشریف کیخلاف جرم ثابت نہ کر سکا ،تفصیلی فیصلہ جاری

فلیگ شپ ریفرنس میں نیب نوازشریف کیخلاف جرم ثابت نہ کر سکا ،تفصیلی فیصلہ جاری

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کو کس بنیاد پر بری کیا گیا؟ احتساب عدالت نے تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا۔ جج ارشد ملک نے قرار دیا ہے نیب نواز شریف کیخلاف اس کیس میں کرپشن ثابت نہیں کر سکااور نیب کی طرف سے پیش کی گئی دستاویزات نامکمل ہیں، فریقین کو فیصلے کی مصدقہ نقول پیر کو ملیں گی۔احتساب عدالت نے 80 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلے میں کہا ہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) فلیگ شپ سمیت 16 آف شور کمپنیوں میں کرپشن اور کمپنیوں سے نواز شریف کا براہ راست تعلق ثابت نہیں کر سکا۔ کمپنیوں سے نواز شریف کو مالی فائدہ پہنچنے اور یہ ان کا بے نامی اثاثہ ہونے کے بھی کافی شواہد نہیں دیئے گئے، اس لئے نواز شریف کو بری کیا جاتا ہے۔جج ارشد ملک نے موسم سرما کی چھٹیا ں منسوخ کر کے تفصیلی فیصلہ تحریر کیا۔ نیب حکام کا کہنا ہے پیر کو فیصلے کی مصدقہ نقول حاصل کر کے نواز شریف کو بری کرنے کا حکم اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

تفصیلی فیصلہ

مزید : صفحہ اول


loading...