اومنی گروپ کے افسروں نے 11جعلی کمپنیوں کے نام پر 35ارب کے 29جعلی اکاؤنٹس کھو لے

اومنی گروپ کے افسروں نے 11جعلی کمپنیوں کے نام پر 35ارب کے 29جعلی اکاؤنٹس کھو لے

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) 35 ارب روپے کے 29 جعلی اکاؤنٹس کھولے گئے، سارے کھاتے اومنی گروپ کے اسلم مسعود اور عارف کے کہنے پر اوپن کئے گئے۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سمٹ بینک میں 16، سندھ بینک میں 8 اور یو بی ایل میں 5 جعلی کھاتے چلتے رہے۔ اومنی گروپ نے اکاؤنٹس کھولنے کیلئے 11 جعلی کمپنیاں بنائیں۔رپورٹ کے مطابق جعلی اکاؤنٹس کیلئے پارک لین کمپنی کا پتہ درج کرایا گیا، یہ کمپنی سابق صدر آصف علی زرداری اور چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کی ملکیت ہے۔رپورٹ میں درج حقائق کے مطابق آصف زرداری کے دست راست مشتاق احمد کے اکاؤنٹس میں 8 ارب روپے کی ٹرانزیکشن ہوئی۔ مشتاق احمد نے آصف زرداری کیساتھ 80 ممالک کے دورے کئے اور اب بیرون ملک فرار ہے۔ آصف زرداری نے مشتاق کو اپنا فزیو تھراپسٹ ظاہر کیا۔جے آئی ٹی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ماڈل ایان علی نے 80 سے زائد بیرون ملک دورے کئے جس دوران کروڑوں روپے باہر منتقل کئے گئے۔آصف زرداری نے متوفی ادریس کے اکاؤنٹس سے 14 کروڑ کی ڈیوٹی ادا کی جبکہ ادریس کا جعلی اکاؤنٹ اس کے انتقال کے بعد بھی چلتا رہا۔رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ اومنی گروپ کے ملازم اشرف کے نام پر پانچ بینک کھاتے کھولے گئے۔ لکی انٹرنیشنل کا اکاؤنٹ عدنان کمپیوٹر ہارڈوئیر کے نام پر کھلا۔ رائل ٹریڈرز اکاؤنٹ احمد انوش رضائی والے کے نام پر کھولا گیا جبکہ ڈریم ٹریڈنگ کا اکاؤنٹ رشید رکشے والے کے نام پر کھلا۔جے آئی ٹی کے مطابق اقبال آرائیں کے نام پر 4 جعلی اکاؤنٹس کھولے گئے۔ اقبال آرائیں کا 9 مئی 2014 ء کو انتقال ہو چکا ہے۔ اومنی گروپ کے ملازم عمیر کے نام پر 10 ارب روپے کے 9 اکاؤنٹس کھولے گئے جبکہ حیرت انگیز طور پر اومنی گروپ ہی عمیر ایسوسی ایٹس کا بے نامی دار تھا۔رپورٹ میں حقائق سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا گیا ہے کہ زرداری گروپ اومنی گروپ کے ہیلی کاپٹر استعمال کرتا رہا۔ زرداری گروپ سے تعلق رکھنے والے افراد نے 60 سے زائد بار ہیلی کاپٹر پر سفر کیا۔ مجید فیملی نے 46 بار ہیلی کاپٹر کا استعمال کیا جس کے لئے رقم جعلی اکاؤنٹس سے ادا کی گئی۔

جعلی کھاتوں کی تفصیل

اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ میں جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت آج چیف جسٹس کی سربراہی میں د و رکنی بنچ کریگا ۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ ہفتے سپریم کورٹ نے اٹارنی جنرل سمیت فریقین کو نوٹسز جاری کئے تھے ۔جس کے مطابق بحریہ ٹاؤن کے سربراہ ملک ریاض بھی پیش ہونگے جبکہ دوسری طرف پیپلز پارٹی کے رہنما سر دار لطیف خان کھوسہ نے کہاہے کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں سپریم کورٹ نے آصف زرداری یا چیئرمین بلاول کو طلب نہیں کیااس لئے عدالت میں قانونی ٹیم پیش ہوگی ۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری ،چیئرمین بلاول بھٹو، فریال تالپوراور وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ عدالت میں پیش نہیں ہوں گے بلکہ فاروق ایچ نائیک اور دیگر وکلا ہی عدالت جائیں گے اور جے آئی ٹی رپورٹ پر اپنا موقف پیش کریں گے۔دوسری جانب مرتضی وہاب نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ عدالت جائیں گے نہ ان کے وکیل پیش ہوں گے، وزیراعلیٰ کو عدالت کی جانب سے کسی قسم کا کوئی نوٹس موصول نہیں ہوا ہے۔

جعلی اکاؤنٹس کیس

مزید : صفحہ اول


loading...