ایک ہی خاندان کے 19 افراد کے شناختی کارڈ 14 سال سے بلاک

ایک ہی خاندان کے 19 افراد کے شناختی کارڈ 14 سال سے بلاک

جندول(نمائندہ پاکستان) جندول تحصیل ثمرباغ کی دور افتہ علاقہ بنشاہی سے تعلق رکھنے والے ایک ہی خاندان کے انیس افراد کے شناختی کارڈ گذشتہ چودہ سال سے بلاک ، متاثرہ خاندان نے شناختی کارڈ اجراء کا مطالبہ کر دیا۔میڈیاں کے نمائندو ں سے گفتگو کرتے ہوئے سمیع اللہ ولد طور خان ساکن بنشاہی تحصیل ثمرباغ کا کہنا تھا کہ سال2005میں نادراء حکام نے نا معلوم وجوہات کے بناء پر ان کے ضعیف العمر اٹانویں سالہ والد کا قومی شناختی کارڈ نمبر15302-0886138-3 بلاک کر دیا تھا ۔انہوں نے کہا کہ والد کا شناختی کارڈ بلاک ہونے کے بعد اس نے اور اس کے بھائی عبد الحمید نے قومی شناختی کارڈ بنانے کیلئے نادراء ثمرباغ سے رجوع کیا مگر انہوں نے یہ کہہ کر کہ ہمارے والد کا شناختی کارڈ بلاک ہے ہمیں بھی شناختی کارڈ جاری کرنے سے انکار کر دیا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے والے کے دو بیویاں اور سولہ اولادیں ہیں اور والد کا شناختی کارڈ بلاک ہونے کی وجہ سے گھر کے تمام افراد کیلئے قومی شناختی کارڈ حاصل کرنا نا ممکن ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ان کے خاندان نے پشاور اور اسلام آباد سے لیکر ضلع دیر لوئر کے ہر دفتر کے چکر کاٹیں اور نادراء دفاتر میں قانونی طریقہ کار کے مطابق انکوائری بورڈ کے سامنے پیش ہوکر اپنے پاکستانی ہونے کے اثبات و ثبوت بھی فراہم کئے مگر چودہ سال طویل عرصہ گذرنے کے بعد بھی انہیں شناختی کارڈ جاری نہیں کرائے گئیں ۔انہوں نے مرکزی و صوبائی حکومت ،وزارت داخلہ اور نادراء حکام سے فوری انکوائری کر کے شناختی کارڈ جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...