ملکی قرضوں میں 1100ارب کا اضافہ ہو گیا : مشتاق احمد خان

ملکی قرضوں میں 1100ارب کا اضافہ ہو گیا : مشتاق احمد خان

تیمرگرہ( بیورورپورٹ ) جماعت اسلامی صوبہ خبیر پختونخواہ کے امیر سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت کی ناقص پالیسی کی وجہ ملکی قرضوں میں گیارہ سو ارب کا اضافہ ہوگیا ہے جبکہ سٹاک ایکسچینج کریش ہونے سے سرمایہ کاروں کی سات سو ارب ڈوب گئے ہیں نیب حکمران جماعت کا آلہ کار بن گیا ہے اور حکومت کی ایما ء پر صرف اپوزیشن کو نشانہ بنا رہی ہے یہ احتساب نہیں انتقام ہے اور ہمیں یہ احتساب منظور نہیں نیب اب تک ایک روپے کی ریکوری نہیں کر پایا پانامہ لیکس میں شامل تمام افراد کا ابھی تک احتساب نہ ہوسکااور نہ حکمران جماعت کے شوگرملز ولینڈ مافیا کے خلادف کارروائی کی گئی پشاور میٹروبس کا تخمنیہ 35 ارب کے بجائے 70ارب کو پہنچ گیا لیکن نیب کی جانب سے کوئی انکوائری نہیں ہوئی احتساب سب کا بلاتفریق ہونا چاہیے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے مرکزی دفتر احیاالعلوم بلامبٹ دیرلوئر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ضلعی امیر اعزازالملک افکاری سابق ممبر قومی اسمبلی صاحبزادہ محمد یعقوب خان ، سیدمشرف شاہ جان، سیکرٹری اطلاعات شعب احمد ودیگر قائدین موجود تھے مشتاق احمد خان نے مزید کہا کہ موجودہ کے ساتھ کوئی منصوبہ بندی نہیں اور حکمرانوں کے دعوئے جھوٹے ثابت ہورہے ہیں ، کشکول توڑنے کی دعوے کرنے والوں حکمران کشکول اُٹھائے بھیک مانگ رہے ہیں اور اسرائیل تک کو کو تسلیم کرنے کیلئے لابنگ کی جارہی ہے موجودہ حکومت میں بجلی گیس ودیگر اشیاء کی قیمتوں میں ہر ہفتہ اضافہ کیا جارہا ہے جبکہ غریب عوام کو کوئی پرسان حال نہیں اور غریب سے دو وقت کی روٹی سے محروم کیا جارہا ہے ،سینیٹر مشتاق احمد نے واضح کیا کہ قوم سے 45قسم کے ٹیکسز وصول کر نے کے باو جو د حکومت جنوری میں منی بجٹ کے ذر یعے مزید ٹیکسز لگانے کی تیار ی کررہی ہے جسمیں گناہ ٹیکس بھی شامل ہے جو کہ اسلامی شعائر کا مذاق اڑانے کے مترداف ہے انہوں نے کہا سابق صدر پرویز مشرف کی ریڈوارنٹ جاری کے باوجود تاحال انصا ف کے کٹہرے میں نہیں لایا گیا ایک سوال کے جواب سینیٹرمشتاق احمد خان نے کہ قبل ازقت الیکشن کی باتیں کرنا موجودہ حکومت کی ناکامی کا منہ ثبوت ہے اور حکمران اپنے ناکامیوں کو چھپانے کیلئے سیاسی شہید ہونا چاہتی ہے لیکن اپوزیشن موجودہ حکومت کو اپنا وقت پوری کرنیکا پورا موقع دئیگی انہوں نے کہا کہ ملک میں امن وامان کی صورتحال غیر تسلی بخش ہے اور مولانا سمیع الحق سمیت دیگر ہائی پروفائل قتل کیسز میں مطلوب ملزمان کو گرفتار نہیں کیا گیا انہوں نے کہا کہ اگر صاف شفاف الیکشن ہوتے تو دیرلوئراور اپر دیر میں جیت جماعت اسلامی کی ہوتی انہوں نے کہا کہ آنے والے بلدیاتی الیکشن میں جماعت اسلامی بھرپور کامیابی حاصل کرے گی ایک سوال کے جواب انہوں نے کہا کہ عام انتخابات میں جماعت اسلامی کے منشور اور پالیسی کی جس نے بھی خلاف ورزی کی ہے ان کے خلاف جماعت اسلامی بھرپور کارروائی کرے گی ۔۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...