عمران خان ہمیشہ تھرڈ ایمپائر کے انتظار میں رہتے ہیں ، نفسیہ شاہ

عمران خان ہمیشہ تھرڈ ایمپائر کے انتظار میں رہتے ہیں ، نفسیہ شاہ

حیدرآباد(بیورو رپورٹ ) پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرینز کی سیکریٹری اطلاعات اور رُکن قومی اسمبلی نفیسہ شاہ نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی کی بنیاد پر 172 افراد کی لسٹ ایگزسٹ کنٹرول لسٹ جاری کی گئی اس میں وزیراعلیٰ سندھ کا بھی نام ڈالا گیا ۔ عمران خان ایک پارٹی کی حکمرانی چاہتے ہیں کیونکہ ان کے پاس دکھانے کیلئے کچھ نہیں ہے ۔ چار ماہ ہوگئے ہیں حکومت اپنی ذمہ داری لینے کو تیا رنہیں ہے ۔وہ حیدرآباد کلب میں میڈیا سے بات چیت کررہی تھیں۔انہوں نے کہاکہ 27دسمبر کو چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے جو سیاسی منظر نامہ پیش کیا وہ خطرناک تھا ، انہوں نے محترمہ بینظیربھٹو کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے وعدہ کیا کہ وہ جمہوریت کا ساتھ دیں گے اور آمرانہ دور جو ان پر مسلط کرنے کی کوشش کی جارہی ہے اس کے کپتان کو بھی مزاحمت کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہاکہ وفاقی حکومت نے وزیراعلیٰ سندھ کا نام ای سی ایل میں ڈال کر انہیں مفلوج کرنے کی کوشش کی ہے ۔ عمران خان جو کہ ہمیشہ تھرڈ ایمپائر کے انتظار میں رہتے ہیں وہ جمہوریت کو نقصان پہنچارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ایف آئی اے نے اصغر خان کیس میں منفی کردار ادا کیا اور عدالت کو کہا کہ یہ 25 سال پرانا کیس ہے اس لئے ہم اس کی تفتیش نہیں کرسکتے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان ایک پارٹی کی حکمرانی چاہتے ہیں کیونکہ ان کے پاس دکھانے کیلئے کچھ نہیں ہے ۔ چار ماہ ہوگئے ہیں حکومت اپنی ذمہ داری لینے کو تیا رنہیں ہے ۔ ان کے وزراء کے پاس گالیاں دینے کے سوا کوئی کام نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر سندھ حکومت کو کوئی نقصان ہوا تو پھر وفاقی حکومت کو بھی نقصان پہنچے گا۔ اس موقع پر سابق سینیٹر عاجز دھامراہ نے کہاکہ پی ٹی آئی کی قیادت سندھ میں آرہی ہے اس سے ہم خوفزدہ نہیں لیکن اگر فساد پھیلانے کی کوشش کی گئی تو سندھ کے جمہوریت پسند عوام اس کی اجازت نہیں دیں گے اور عوام اس کا بھرپور جواب بھی دیں گے۔ ان کا کہنا تھاکہ یہ انڈر19 کی ٹیم ہے اور یہ لوگ جو سندھ میں جو ملاقاتیں کررہے ہیں وہ سب اپوزیشن کے لوگ ہیں ، یہ تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ پیپلزپارٹی کی حکومت کو گرادیں گے یہ سیاست کے بونے ہیں۔ پی ٹی آئی اپنی ناکامیوں سے دھیان ہٹانے کی کوشش کررہی ہے۔خود پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی عمران خان کے رویئے سے بیزار ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ آئین کے مطابق 6ماہ تک اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد پیش نہیں کی جاسکتی ، پی ٹی آئی کے ایم این اے ہم سے رابطے میں ہیں۔ پی ٹی آئی کے پاس سندھ میں حکومت بنانے کیلئے دو ہی راستے ہیں ایک تو وہ عدم اعتماد کی تحریک لے کر آئے یا پھر 2023ء تک انتظار کرے اور پھر انتخاب میں حصہ لے۔ انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کا احتساب کرنے سے پہلے عمران نیازی کا ہیلی کاپٹر کیس میں نام ہے اسے ای سی ایل میں ڈالا جائے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...