2018 ء کا قابل ذکر واقعہ، قاتلوں کا جیل میں ہونا ہے،طاہرالقادری

2018 ء کا قابل ذکر واقعہ، قاتلوں کا جیل میں ہونا ہے،طاہرالقادری

لاہور (نمائندہ خصوصی) قائد تحریک منہاج القرآن سربراہ پی اے ٹی ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا ہے 2018 ء کا قابل ذکر واقعہ قاتلوں کا اقتدار کی بجائے جیل میں ہونا اور زینب کو انصاف ملنا ہے،2019 ء میں بیٹی بسمہ کو انصاف ملے گا اور تنزیلہ امجد، شازیہ مرتضیٰ سمیت شہدائے ماڈل ٹاؤن کے قاتل اپنے انجام کو پہنچیں گے، نئی جے آئی ٹی سے انصاف کی امید ہے،انصاف بشکل قصاص کی جدوجہد ضرور رنگ لائے گی،وہ عمرہ کی سعادت حاصل کرنے کے بعد آج لاہور پہنچیں گے جہاں کارکن ان کا استقبال کریں گے ،ٹیلیفون پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا عوامی تحریک نے سیاسی مافیا اور قاتل اشرافیہ کے خلاف طویل جدوجہد کی، لاشیں اٹھائیں،بدترین کردار کشی مہم کا سامنا کیا،جھوٹے مقدمات اور کارکنوں کی پکڑدھکڑ برداشت کی مگرظالم اور کرپٹ حکمرانوں کے سامنے جھکنے سے انکار کیا۔ آج کھلی لوٹ مار پر انتقام کا واویلا کرنے والوں نے ہمارے 25 ہزار سے زائد کارکن حبس بے جا میں رکھے، سینکڑوں پر دہشتگردی سے جعلی مقدمات بنائے ، مجھ پر پاکستان کی زمین تنگ کرنے کے منصوبے بنانے والے آج جیلوں میں ہیں اور ان پر اسی وطن کی زمین تنگ ہو چکی اور وہ نشان عبرت بنے ہوئے ہیں، یہ ظالموں ،مغروروں کیلئے اللہ کا امر اور کھلی نشانی ہے ۔کرپشن اور ناانصافی کے خاتمے کیلئے ایک کردار حکومت اور عدلیہ کا ہے، اس ضمن میں فیصلہ کن کردار عوام نے ادا کرنا ہے، عوام ملکی وسائل کو لوٹنے اور ووٹ کو نوٹ اکٹھے کرنے کا ذریعہ بنانے والوں کا محاسبہ کریں اور ایسے عناصرکو مقدس ایوانوں تک مت پہنچنے دیں ۔

طاہر القادری

مزید : صفحہ آخر


loading...