اپنے بڑوں کوبتادیں،کارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی،چیف جسٹس کے جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس میں ریمارکس

اپنے بڑوں کوبتادیں،کارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی،چیف جسٹس کے جعلی بینک ...
اپنے بڑوں کوبتادیں،کارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی،چیف جسٹس کے جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس میں ریمارکس

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس میں اومنی گروپ کے الزام پر پیمرا کو کل تک جواب جمع کرانے کی مہلت دیدی، چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے ہیں کہ جعلی بینک اکاؤنٹس پرکارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی جارہی،اپنے بڑوں کوبتادیں،کارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے جعلی بینک اکاﺅنٹس کی سماعت کی،چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ تاثردیا گیاای سی ایل کیلئے سپریم کورٹ نے نام دیئے،بتادیں کیاہم نے کہاتھاکہ ای سی ایل میں نام ڈالیں؟۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ تک محدودنہیں،کئی اورلوگوں کوبھی دیکھ رہے ہیں،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ جے آئی ٹی کاکام صرف حقائق کاکھوج لگاناتھا۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ جے آئی ٹی اتناکام کرے جتنا کہاگیا،وکیل نیشنل بینک نے کہا کہ اومنی گروپ سے 11 ارب روپے ریکورکرنے ہیں،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ اس وقت اومنی گروپ کون چلارہا ہے؟وکیل اومنی گروپ نے کہا کہ نمرمجیدکراچی میں ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ نمرمجید کوگرفتار کرلیں؟وکیل جے آئی ٹی نے کہا کہ اومنی گروپ کے تمام پیسے جرائم سے آئے ہیں،عدالت نے جعلی بینک اکاو¿نٹس کیس کی سماعت جمعرات تک ملتوی کردی اورحکم دیا ہے کہ اومنی گروپ کے الزام پر پیمراکل تک جواب جمع کرائے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ جعلی بینک اکاو¿نٹس پرکارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی جارہی،اپنے بڑوں کوبتادیں،کارروائی کسی کے کہنے پرنہیں کی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...