2018 میں روپے کی قدر میں 26 فیصد کمی، بیرونی قرضوں میں 2400 ارب کا اضافہ

2018 میں روپے کی قدر میں 26 فیصد کمی، بیرونی قرضوں میں 2400 ارب کا اضافہ
2018 میں روپے کی قدر میں 26 فیصد کمی، بیرونی قرضوں میں 2400 ارب کا اضافہ

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) سال 2018 کے دوران امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی وہ بے قدری ہوئی جس کی تاریخ میں مثال ڈھونڈنا مشکل ہے۔

2018 کے دوران انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں 26 فیصد اضافہ ہوا اور یہ روپے کے مقابلے میں 28 روپے 36 پیسے مہنگا ہوا۔سال 2018ءکے آخری روز (آج 31 دسمبر کو) انٹر بینک میں ڈالر 138 روپے 86 پیسے پر بند ہوا۔

اوپن مارکیٹ میں بھی ایک سال کے دوران ڈالر کی قدر میں 26 فیصد کا اضافہ ہوا۔ 2018 میں اوپن مارکیٹ میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں 28 روپے 40 پیسے کی کمی ہوئی۔رواں سال ڈالر کی قیمت میں 26 فیصد اضافے کے باعث بیرونی قرضے 2400 ارب روپے تک بڑھ گئے۔

دوسری جانب سٹاک مارکیٹ بھی رواں سال شدید مندی کا شکار رہی۔ سٹاک مارکیٹ میں 2018 کے دوران 3 ہزار 385 پوائنٹس کی کمی ہوئی جبکہ غیر ملکی سرمایہ کاروں نے 53 کروڑ ڈالر کے شیئرز فروخت کیے۔

مزید : بزنس


loading...