سیف سٹی منصوبے منصوبہ، غیر ملکی کمپنی سے معاہدے پر تحفظات ہیں، توسیع نہیں دینگے 

سیف سٹی منصوبے منصوبہ، غیر ملکی کمپنی سے معاہدے پر تحفظات ہیں، توسیع نہیں ...

  



لاہور(این این آئی) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں ایوان کو بتایا گیا ہے کہ صوبائی حکومت کے سیف سٹی منصوبے کے حوالے سے غیر ملکی کمپنی سے کئے گئے معاہدے پر تحفظات ہیں اس لئے حکومت اس معاہدے کو توسیع نہیں دینا چاہتی،کمپنی سیف سٹی پراجیکٹ کے تمام خراب کیمروں کو ٹھیک کرنے کی پابند ہے،پنجاب میں ستمبر2018سے ستمبر 2019 تک بچوں سے زیادتی کے کل 1024 مقدمات رجسٹر ہوئے،صرف لاہور میں بچوں سے زیادتی کے 152 مقدمات رجسٹر ہوئے،حکومت نے یونیورسٹی آف نارتھ چکوال کا بل کثرت رائے سے منظور کر لیا۔پنجاب اسمبلی کا اجلاس سپیکر چوہدری پرویز الٰہی کی زیر صدارت مقررہ وقت کی بائے ایک گھنٹہ 25منٹ تاخیر سے شروع ہوا۔صوبائی وزیر راجہ بشارت نے محکمہ داخلہ سے متعلق سوالوں کے جوابات دئیے۔وزیر قانون راجہ بشارت نے لیگی رکن اسمبلی باؤ اختر کے سوال کے جواب میں ایوان کو بتایا کہ سابقہ دور حکومت میں غیر ملکی کمپنی کے ساتھ سیف سٹی پراجیکٹ کا معاہدہ کیا گیا،سابقہ دور جو معاہدہ کیا اس پر تحفظات ہیں،معاہدے کے تحت کمپنی خراب ہونے والے تمام کیمرے ٹھیک کرنے کی پابند ہے۔وزیر قانون نے ایوان کو بتایا کہ غیرملکی کمپنی کے ساتھ ادائیگی کے معاملے پر تنازعہ چل رہا ہے،موجودہ حکومت کمپنی کے ساتھ معاہدے کو مزید توسیع نہیں دینا چاہتی،پنجاب حکومت اس کمپنی کے ساتھ مزید کام نہیں کرنا چاہتی۔صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے یونیورسٹی آف نارتھ چکوال پنجاب 2019 کا پیش کیا جس کو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا۔پنجاب اسمبلی میں پتنگ بازی کے حوالے سے تفصیلات بھی پیش کر دی گئی ہیں جس میں بتایا گیا کہ رواں سال کے دوران شہر کے مختلف تھانوں میں پتنگ بازی کے 1349 مقدمات رجسٹر کیے گئے۔پنجاب اسمبلی میں جمع کرائی گئی تفصیلات میں کہا گیا ہے کہ ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں 800 جبکہ سٹی ڈویژن میں 549 مقدمات درج ہوئے تاہم سول لائن ڈویژن نے مقدمات کی تفصیل پیش نہیں کی۔محکمہ داخلہ کے مطابق پتنگ بازی کی روک تھام کے لیے تمام وسائل کو بروئے کار لایا جا رہا ہے۔ مساجد، کیبل اور ٹی وی پر انسداد پتنگ بازی کے اشتہارات بھی دئیے گئے لیکن اس سلسلے میں چلائی گئی آگاہی مہم بھی کام نہیں آئی۔اجلاس کا ایجنڈا مکمل ہونے پر سپیکر چوہدری پرویز الٰہی نے اجلاس آج منگل سہ پہر تین بجے تک کیلئے ملتوی کردیا۔پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز پنجاب اسمبلی کے رواں سیشن کے دوران ایک دن بھی کسی ایشو پر ایوان میں بات نہ کی۔پنجاب اسمبلی کے 17ویں سیشن کو شروع ہوئے روز گزر چکے ہیں تاہم قائد حزب اختلاف نے پرویز مشرف کیخلاف فیصلے،نیب ترمیمی آرڈیننس سمیت کسی ایشو پربھی ایوان میں بات نہیں کی۔قائد حزب اختلاف رواں سیشن میں زیادہ وقت اپنے چیمبر تک محدود رہے۔

پنجاب اسمبلی

مزید : صفحہ آخر


loading...