چینی غائب ہونے کا معاملہ،اومنی گروپ اور نجی بینکوں کو جامع رپورٹس پیش کرنے کا حکم 

چینی غائب ہونے کا معاملہ،اومنی گروپ اور نجی بینکوں کو جامع رپورٹس پیش کرنے ...

  



کراچی(این این آئی)بینکنگ کورٹ نے اومنی گروپ کی شوگر ملز سے اربوں روپے کی چینی غائب ہونے سے متعلق اومنی گروپ اور نجی بینکوں کو آئندہ سماعت تک جامع رپورٹس پیش کرنے کا حکم دیدیا۔ کراچی کی بینکنگ کورٹ کے روبرو اومنی گروپ کی شوگر ملز سے اربوں روپے کی چینی غائب ہونے سے متعلق سماعت ہوئی۔ عدالت نے اومنی گروپ اور نجی بینکوں کے مابین سیٹلمنٹ ناکام ہونے کی وجوہات طلب کر لیں۔ عدالت نے ریماکس دیئے بتایا جائے کن شرائط پر سیٹلمنٹ کی جا رہی تھی۔ سیٹلمنٹ ناکام کیوں ہوئی، وجوہات سے آگاہ کیا جائے۔ عدالت نے ہدایت کی کہ وجوہات کا جائزہ لے کر بینکوں کی کمپلینٹس فعال کرنے کی درخواستوں پر کارروائی آگے بڑھائی جائے گی۔ عدالت کا سمٹ بینک، سندھ بینک اور نیشنل بینک کو آئندہ سماعت تک جامع رپورٹس پیش کرنے کا حکم دیدیا۔ نجی بینکوں نے اومنی گروپ کیخلاف درجن سے زائد کمپلینٹس دائر کر رکھی ہیں۔ اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید، عبدالغنی مجید، علی کمال مجید, مصطفی ذوالقرنین مجید، صائمہ مجید، منہال مجید، نمر مجید سمیت دیگر بطور ملزمان نامزد ہیں۔ اومنی گروپ کی شوگر ملز کے خلاف سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہدایت پر کارروائی کی گئی تھی۔ بینکوں نے موقف اپنایا تھا کہ بینک شوریٹی کے لیے رکھا گیا چینی کا اسٹاک غائب کیا گیا۔ شوگر ملز کے چیف ایگزیکٹو افسران اور ڈائریکٹرز کیخلاف کارروائی کی جائے۔ استغاثہ کے مطابق بینکوں کو بتائے بغیر مطلوبہ اسٹاک غائب کرنا کرمنل جرم ہے۔

رپورٹ حکم

مزید : صفحہ آخر