مقبوضہ کشمیر، 148ویں روز بھی فوجی محاصرہ جاری، بھارتی مظالم دکھانے پر فیس بک پر ریڈیو پاکستان کی لائیو سٹریمنگ بند 

مقبوضہ کشمیر، 148ویں روز بھی فوجی محاصرہ جاری، بھارتی مظالم دکھانے پر فیس بک ...

  



سرینگر،نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں)مقبوضہ کشمیر میں پیر کو شدید سرد موسم اور مسلسل 148ویں روزسے وادی کشمیر اور جموں کے مختلف علاقوں میں جاری فوجی محاصرے اور سخت پابندیوں نے لوگوں کی مشکلا ت میں اور بھی اضافہ کردیا ہے۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق دفعہ 144کے تحت سخت پابندیاں نافذ ہیں جبکہ پری پیڈ موبائل، ایس ایم ایس اور انٹرنیٹ سروسز مسلسل معطل ہونے کے باعث مقبوضہ علاقے کے محصور عوام کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں۔ مقبوضہ علاقے میں انٹرنیٹ کی معطلی سے تمام چھوٹے بڑے کاروباری ادارے جن سے لاکھوں لوگ وابستہ ہیں بری طرح متاثر ہو ئے ہیں۔جموں میں ایک سیمینار کے مقررین نے نریندر مودی کی سربراہی میں بھارتی حکومت کی طرف سے یکطرفہ طور پر جموں وکشمیر کی خصوصی حیثیت کی منسوخی پر شدید تشویش ظاہر کی ہے۔سیمینار کا اہتمام جموں میں سنٹر فار پیس اینڈ پروگریس نے کیاتھا،جس میں سول سوسائٹی  اورمختلف سماجی اور سیاسی تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ مقررین نے سرحدوں پر کشیدگی میں کمی کیلئے بھارت اور پاکستان کے درمیان مذاکرات شروع کرنے پر زوردیا۔سیمینار کے مقررین میں شیخ عبدالرحمن،آئی ڈی کھجوریہ اوردیگربھی شامل تھے۔جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک اور سینئر پارٹی رہنماء شوکت احمدبخشی جو تہاڑ اور اترپردیش جیلوں میں غیر قانونی طورپر نظربند ہیں کوان کے خلاف کئی برس قبل درج کئے گئے ایک جھوٹے مقدمے میں ویڈیو لنک کے ذریعے جموں کی ٹاڈا عدالت میں پیش کیاگیا۔دریں اثناء مقبوضہ کشمیر میں قابض حکام نے مقامی اور بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے ہائی کورٹ میں غیر مقامی لوگوں کے لیے نوکریوں کے مواقع کھول دیے ہیں۔ مختلف کیٹگریز میں 33 نان گیزیٹڈ اسامیوں کے لیے اشتہارات دیے گئے اور پہلی بار غیر مقامی لوگوں کونوکریوں کے لیے درخواست دینے سے مستثنیٰ نہیں رکھا گیا۔ مقامی لوگ اس اقدام کو ان کے بنیادی حقوق پر ڈاکہ سمجھتے ہیں۔مقبوضہ کشمیر میں ہائی کورٹ نے متعلقہ حکام کو بارایسوسی ایشن کے صدر میاں عبد القیوم کی صحت کے بارے میں تازہ ترین رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے جو بھارتی ریاست اتر پردیش کی جیل میں غیر قانونی طورپرنظربند ہیں۔ میاں عبدالقیوم ذیابیطس اور دل کے امراض میں مبتلاہیں۔دوسری طرف مقبوضہ کشمیر میں مظلوم عوام پر بھارتی ظلم و ستم اور جبر کو نیوز بلیٹن میں دکھانے پر فیس بک نے پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن کی لائیو اسٹریمنگ کو بلاک کردیا ہے۔ریڈیو پاکستان نے رپورٹ کیا کہ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک نے جس مواد کی بنیاد پر اسٹریمنگ کو بند کرنے کا اقدام اٹھایا ان کے اسکرین شاٹس ریڈیو پاکستان کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کیے گئے ہیں۔تاہم فیس بک کی جانب سے لائیو اسٹریمنگ بلاک کیے جانے کے بعد پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن نے متبادل انتظامات کرتے ہوئے ریڈیو پاکستان کے بلیٹن یوٹیوب پر نشر کرنے شروع کردیے ہیں۔

کشمیر 

مزید : صفحہ اول