احساس پروگرام کے تحت سندھ میں 50 کروڑکے بلاسود قرضے تقسیم

احساس پروگرام کے تحت سندھ میں 50 کروڑکے بلاسود قرضے تقسیم

  



لاہور(پ ر) حکومت پاکستان کے احساس پروگرام کے تحت نیشنل پاورٹی گریجویشن پروگرام کے ذریعے سندھ کے 10اضلاع میں 50 کروڑ روپے مالیت کے بلاسود قرضے تقسیم کئے گئے۔ اس موقع پر پیر کو منعقدہ تقریب میں سندھ کے گورنر عمران اسماعیل نے بھی غریبوں میں بلاسود قرضوں کے چیک تقسیم کئے۔ احساس پروگرام کے تحت 4 لاکھ 13 ہزار 390 افراد میں 13.8 ارب روپے مالیت کے قرضے تقسیم کئے جاچکے ہیں جن میں 46 فیصد خواتین ہیں۔ صرف سندھ میں 15 ہزار سے زائد افراد میں 50کروڑروپے مالیت کے قرضے فراہم کئے گئے ہیں جن میں 70 فیصد خواتین ہیں۔ اس اقدام کے لئے حکومت پاکستان، انٹرنیشنل فنڈ فار ایگریکلچرل ڈیولپمنٹ (IFAD) اور ایشیائی ترقیاتی بینک کی جانب سے وسائل فراہم کئے جارہے ہیں۔ احساس پروگرام کے تحت ملک کے بھر کے 100 اضلاع کے لئے مجموعی طور پر 42.65 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔ اس رقم سے ایک کروڑ 60 لاکھ 28 ہزار افراد کی زندگیوں پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے جن میں 50 فیصد خواتین کے ساتھ نوجوان، معذور افراد، خواجہ سرا، اقلیت اور پسماندہ طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد شامل ہیں۔ اس پروگرام کے تحت اگلے چار سالوں میں 22لاکھ 80ہزار گھرانوں کو 38لاکھ بلاسود قرضے فراہم کئے جائیں گے۔ مجموعی طور پر ایک کروڑ 47لاکھ افراد اس حصے سے مستفید ہوں گے۔ اس پروگرام پر پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) اور اخوت فاؤنڈیشن کے ذریعے عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا، "پاکستان میں لاکھوں گھرانے انتہائی غربت کا شکار ہیں، وہ زندگی کی بنیادی ضروریات کی بھی رسائی نہیں رکھتے ۔ بلاسود قرضے کے پروگرام سے انہیں اپنا مستقبل بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔ یہ ہماری حکومت کی ترجیح ہے کہ پاکستان کے پسماندہ طبقوں کو سہولیات فراہم کریں۔

اور احساس پروگرام کے ذریعے ہمارا عزم ہے کہ لاکھوں افراد کو غربت کے دائرے سے باہر نکالا جائے۔ اس پروگرام سے نہ صرف روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے بلکہ یہ معاشی خوشحالی کے لئے بھی اہم کردار ادا کرے گا۔"

مزید : کامرس