رنچھوڑ لین میں بلڈنگ گرنے کا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے،فردوس شمیم نقوی

رنچھوڑ لین میں بلڈنگ گرنے کا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے،فردوس شمیم نقوی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) قائد حزب اختلاف سندھ فردوس شمیم نقوی، صدر پی ٹی آئی کراچی خرم شیر زمان، جنرل سیکریرٹری پی ٹی آئی کراچی سعید آفریدی اور رکن سندھ اسمبلی راجہ اظہر نے آج رنچھوڑلین میں منہدم ہونے والی عمارت کی جگہ کا دورہ کیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ رنچھوڑ لین میں بلڈنگ کرنے کا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے۔یہ واقعہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔انہوں نے کہا کہ سانحہ ہوا مگر خوش قسمتی سے جانی نقصان نہیں ہوا۔ فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ عمارت منہدم ہونے کی دو ہی وجوہات ہوسکتی ہیں،کنکنریٹ کا خراب ہونا یاسریاخراب ہونا۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی غفلت برتنے والے کوبرطرف کرے اورتحقیقات کی جائے۔اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ ایس بی سی اے اپنا کام انتہائی نااہلی سے انجام دے رہی ہے۔اس عمارت کے گرنے سے اطراف کی عمارتیں بھی متاثر ہوئی ہونگی۔ایس بی سی اے فوری طور پر ان عمارتوں کا جائزہ لے۔ اس موقع پرصدر پی ٹی آئی کراچی خرم شیر زمان کا کہنا تھا کہ پورے صوبے میں سب سے کرپٹ ادارہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی ہے۔جہاں رشوت کا بازار ہمہ وقت گرم رہتا ہے۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی ایک ایک منزل کی مد میں کروڑوں روہے رشوت لیتی ہے۔جتنے نوٹ دو اتنی منزلیں بنا لو۔رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا کہ آج افسوسنان واقعہ پیش آیا، خدا کا شکر ہے کہ جانی نقصان نہیں ہوا۔ سندھ حکومت اس واقعے میں ملوث زمہ داران کو گرفتار کروائے اور جن کا نقصان ہوا ہے انکا ازالہ کرے۔انہوں نے مزید کہا کہ منظور کاکا کے دور سے کراچی کا یہی حال ہے۔بلاول زرداری آج کہاں ہیں، وہ جواب دیں کہ ان لوگوں کہ نقصان کا ازالہ کون کرے گا۔ محکمہ بلدیات میں پہ درپہ چھ وزرا تبدیل ہوئے تاہم ایک بھی وزیر سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو ٹھیک نہیں کرسکا۔ خرم شیر زمان نے کہا کہ بلڈنگ کنٹرول کے اختیارات میئر کراچی کے پاس ہونے چاہئے۔ انہوں نے نئے سال کے حوالے سے کہا کہ سال 2020 میں پیپلز پارٹی کی سندھ میں حکومت ختم ہو جائے گی۔ بعد ازاں جنرل سیکریٹری پی ٹی آئی کراچی سعید آفریدی کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت بتائے کہ اس عمارت کا نقشہ کس نے پاس کیا تھا۔ سندھ حکومت اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی شہریوں کی جان کے ساتھ کھیل رہی ہے۔ حکومت سندھ شہر کی تمام خستہ حال عمارتوں کو فوری خالی کروائے اور مکینوں کو متبادل رہائش فراہم کی جائے تا کہ کسی بھی قسم کے جانی نقصان سے بچا جاسکے۔

مزید : صفحہ اول