"اگر آپکی اس بہن کے پاس خان صاحب کی کوئی ویڈیو ہوتی تو تم جیسوں نے منہ مانگی قیمت دے کر۔۔۔ " حریم شاہ معاملہ، وینا ملک کس پر برس پڑیں؟

"اگر آپکی اس بہن کے پاس خان صاحب کی کوئی ویڈیو ہوتی تو تم جیسوں نے منہ مانگی ...

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)ٹک ٹاک اسٹار حریم شاہ کی سیاست دانوں اور مشہورشخصیات کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو ز پر نہ صرف سوشل میڈیا صارفین بلکہ سینئر صحافی بھی خوب تبصرے کررہے ہیں۔حریم شاہ کے نام سے منسوب ایک ٹویٹر اکاونٹ پر جب عمران خان کی ویڈیو لگانے کی دھمکی دی تو سوشل میڈیا پر ایک ہنگامہ کھڑا ہوگیا۔

اسی دھمکی کی خبر دیتے ہوئے سینئر صحافی سید طلعت حسین نے ٹویٹ کیا کہ ’ٹک ٹاک لڑکی حریم کی شیخ رشید ویڈیوجاری کرنے اور بیہودہ ویڈیو بھیجنے کے الزام کے بعد عمران خان کی ویڈیو لگانے کی دھمکی،ٹویٹ کرنے کے بعد ڈیلیٹ کردی۔‘

طلعت حسین کے ٹویٹ پر جہاں متعدد لوگوں نے تبصرے کئے وہیں اداکارہ وینا ملک بھی بحث میں کود پڑیں۔ انہوں نے طلعت کے ٹویٹ کو شیئر کرتے ہوئے تبصرہ کیا کہ ’یو ٹیوب پر فلاپ شو کرنے والے انکل یہ جعلی اکاونٹ ہے ویسے تو آپکی خبروں کی سچائی کا معیار پورے پاکستان کو پتہ ہے۔ مگر بتانا یہ تھا کہ اگر آپ کی اس بہن کے پاس خان صاحب کی کوئی ویڈیوہوتی تو تم جیسوں نے منہ مانگی قیمت دے کر اب تک خریدلینی تھی۔۔۔!!!‘

وینا ملک کا ٹویٹ کرنا تھا کہ بحث نے نیا رخ اختیارکرلیا۔ایچ بی ورک نامی ایک صارف نے ٹویٹ کیا کہ ’فالتو کی ایڈورٹائزمنٹ کا شوق ہے ان انکل کو اور اس سڑک چھاپ اداکارہ جس کا نام حریم نہی فضہ حسین ہے یہ بھول چکی ہے کہ یہ ایک عورت ہے اور اسلام میں عورت کا کیا مقام ہے کیا عزت ہے شاید اور ہم لوگ اسکو توجہ دے کر فالتو میں اپنا ٹائم ضائع کر رہے ہیں دعا کرو اللّہ پاک ہمیں ہدایت دے‘

ارسلان نامی ایک صارف نے تبصرہ کیا کہ ’بالکل یہ عمران خان کو بدنام کرنے کے لئے ہر حد ٹک جا سکتے۔۔۔۔جو بینظیر کی ننگی تصویریں بنوا کے پھینک سکتے ان کی حد کوئی نہیں۔‘

پی ایس ایف آزاد نے وینا ملک کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے لکھا کہ ’اور آپ کی ویڈیوز سے تو یوٹیوب بھراہوا ہے، صرف سرچ کرو‘ اپنا کریکٹر دیکھا ہے میاخلیفہ کی بہن‘

ایلین کے مطابق’لیکن ایک تو ثابت ہو گی ہے کی خان صاحب کی کابینہ ٹھرکیوں سے بھری ہوئی ہے لڑکی دیکھی نہیں کے منہ سے رال ٹپکنی شروع‘

لالہ پشوری نے لکھا کہ’وزیراعظم سے لے کر موجودہ کابینہ تک حریم شاہ والے پیج پر سبھی ایک ہیں۔‘

سوشل میڈیا پر جاری یہ بحث کب ختم ہوگی،شاید کوئی نہیں جانتا۔

مزید : تفریح