جس استاد کو سیاست کا شوق ہے وہ جا کر سیاست کرے،چیف جسٹس اطہر من اللہ کے کامسیٹس یونیورسٹی امتحانات میں تاخیرسے متعلق کیس میں ریمارکس

جس استاد کو سیاست کا شوق ہے وہ جا کر سیاست کرے،چیف جسٹس اطہر من اللہ کے ...
جس استاد کو سیاست کا شوق ہے وہ جا کر سیاست کرے،چیف جسٹس اطہر من اللہ کے کامسیٹس یونیورسٹی امتحانات میں تاخیرسے متعلق کیس میں ریمارکس

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کامسیٹس یونیورسٹی امتحانات میں تاخیرسے متعلق کیس میں ریمارکس دیتے ہوئے کہاہے کہ یونیورسٹی کے اصل سٹیک ہولڈرز طلباہیں جو آپ کے بچوں کی طرح ہیں،جس استاد کو سیاست کا شوق ہے وہ جا کر سیاست کرے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں کامسیٹس یونیورسٹی امتحانات میں تاخیرسے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ نے کہا کہ اساتذہ کی مشکلات اورمطالبات دیکھنا یونیوسٹی انتظامیہ کاکام ہے،نمائندہ وزارت سائنس وٹیکنالوجی نے کہا کہ ابھی تک تو یونیورسٹی ہی اس معاملے کو دیکھ رہی تھی۔

چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے نمائندے سے استفسارکیاکہ اب آپ کیا ٹائم فریم دیتے ہیں؟2سال سے عبوری سیٹ اپ چل رہا ہے، اب مستقل تقرریاں ہونی چاہئیں،نمائندہ وزارت سائنس و ٹیکنالوجی نے کہا کہ جس طرح عدالت حکم دے گی ہم اس طرح سے چلیں گے۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہا کہ آپ کہہ رہے ہیں کہ عبوری سیٹ اپ کی جگہ مستقل تقرریاں ہو جائیں گی، معاشرے میں استاد کا بہت بڑا مقام ہے ، اب تحمل کا مظاہرہ کریں ، عدالت اس درخواست کو نہیں نمٹائے گی بلکہ ایک ماہ کیلئے ملتوی کرے گی، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ آپ ادارے کی ساکھ خراب نہ کریں اور یہ باتیں اپنے تک رکھیں،مستقل باڈی کو آنے دیں جو ان مسائل کو دیکھے گی،یونیورسٹی کے اصل سٹیک ہولڈرز طلباہیں جو آپ کے بچوں کی طرح ہیں،جس استاد کو سیاست کا شوق ہے وہ جا کر سیاست کرے، عدالت نے کامسیٹس یونیورسٹی امتحانات میں تاخیرسے متعلق کیس کی سماعت 3فروری تک ملتوی کردی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد