کراچی میں نوکری پیشہ لڑکیوں کا پیچھا کرکے ان کو مراعات کی پیشکش کرنے والے شخص کو ایک لڑکی نے فون کر کے بہلا یا اور پھسلا کر ملنے بلا لیا لیکن اس کے بعد کیا ہوا ؟ سوشل میڈیا پر حیران کن ویڈیوز نے ہنگامہ برپا کر دیا

کراچی میں نوکری پیشہ لڑکیوں کا پیچھا کرکے ان کو مراعات کی پیشکش کرنے والے شخص ...
کراچی میں نوکری پیشہ لڑکیوں کا پیچھا کرکے ان کو مراعات کی پیشکش کرنے والے شخص کو ایک لڑکی نے فون کر کے بہلا یا اور پھسلا کر ملنے بلا لیا لیکن اس کے بعد کیا ہوا ؟ سوشل میڈیا پر حیران کن ویڈیوز نے ہنگامہ برپا کر دیا

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )کراچی کے علاقے ” پی ای سی ایچ ایس “ میں اکیلی جاتی ہوئی خواتین کا پیچھا کرتے ہوئے انہیں چھیڑنے اور بلیک میل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تاہم معافی تلافی کے بعد اسے جانے کی اجازت دیدی گئی ہے ۔

فیس بک پیج پر ” آزاد لغاری “ نامی سوشل میڈیا صارف نے ویڈیوز جاری کی ہیں اور ساتھ میں اس کی تفصیلات بتاتے ہوئے لکھا ہے کہ کراچی کے علاقے پی ای سی ایچ ایس سے خواتین کو ہراساں کرنے والا شخص ایک مرتبہ پھر سے پکڑا گیاہے جس کانام عرفان میمن ہے اور یہ پانچ بچوں کا باپ ہے ،یہ ڈی ایچ اے میں خواتین کو ہراساں کرنے میں ملوث ہے ۔

سوشل میڈیا صارف کا کہناتھا کہ یہ شخص اکیلی رہنے والی خواتین اور نوکری کرنے والی لڑکیوں کو اکیلا دیکھ کر ان کا تعاقب کرتاہے اور اچھی نوکری کے ساتھ مراعات کے سبز باغ دکھا کر انہیں پیشکش کرتا ہے ، اب جو لڑکیاں اس کی باتوں میں آ کر اچھے روزگار کیلئے اپنی سی وی اس کو دے دیتی ہیں یہ انہیں ٹیلیفون پر غیر اخلاقی آفرز دیتاہے اور ان کی سی وی سے گھر کا پتا نکال کر ان کے دروازے کے گرد منڈلاتا رہتاہے ۔

جولڑکی اس شخص کی غیر اخلاقی پیشکش کو قبول نہیں کرتی ہے یہ انہیں بلیک میل کرنا شروع کر دیتا ہے تاہم اسے سبق سکھانے کیلئے ایک لڑکی نے اس بلیک میلنگ کی شکایت پولیس کو کردی اور اسے بہانے سے بہلا پھسلا کر ملنے کیلئے بلایا اور پولیس کے ہاتھوں گرفتار کروا دیا جس کی صارف کی جانب سے ویڈیو بھی شیئر کر دی ہے ۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتاہے کہ وہ شخص کہہ رہاہے کہ میں معافی مانگ چکاہوں جبکہ دوسرے ویڈیو کلپ میں وہ شخص گاڑی میں بیٹھا دکھائی دیتا ہے اور کہتا ہے کہ میں آج کے بعداس کی طرف دیکھوں گا بھی نہیں جس پر لڑکی کی آوازآتی ہے کہ معافی مانگو جس پر عرفان نامی شخص کہتاہے کہ میں پیر پکڑلیتاہوں تمہارے ۔

فیس بک صارف کا کہناتھا کہ اس شخص کو ایک رات تھانے مین رکھا گیا لیکن بعد ازاں اسے رہا کر دیا گیا ، سوشل میڈیا پر فراہم کی گئی معلومات میں بتایا گیا کہ اس شخص کو ا س سے قبل بھی زمزمہ کے علاقے میں ایک لڑکی نے گرفتار کروایا تھا تاہم یہ پچاس ہزار روپے دے کر معافی تلافی کرنے کے بعد جان چھڑوا کر چلا گیا تھا اور اب یہ پی سی ایچ ایس سے پکڑا گیاہے ، اس کا چہرہ پہنچانیں اور محتاط رہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس