سال 2019اپوزیشن کے ساتھ ساتھ حکومت کے لئے بھی بدترین ثابت ہوا ، چودھری منظور کادعویٰ

سال 2019اپوزیشن کے ساتھ ساتھ حکومت کے لئے بھی بدترین ثابت ہوا ، چودھری منظور ...
 سال 2019اپوزیشن کے ساتھ ساتھ حکومت کے لئے بھی بدترین ثابت ہوا ، چودھری منظور کادعویٰ

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پیپلز پارٹی کے رہنما چودھری منظور نے کہاہے کہ معیشت اور احتساب کے حوالے سے سال 2019 بدترین سال ہے ، حکومت اور اپوزیشن کیلئے بھی یہ بدترین سال ثابت ہوا ہے ۔

دنیا نیو ز کے پروگرام ”آن دا فرنٹ“میں گفتگو کرتے ہوئے چودھری منظور نے کہاکہ سال2019 پاکستان کی تاریخ کے بدترین سالوں میں سے ہے ، یہ کسی کے لئے بھی اچھا نہیں ہے ، ایک عام آدمی کا تو کچومر نکال دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسان سے پوچھیں تو وہ مرگیاہے ، مزدور بے روزگار ہوگئے ہیں ، کاروباری افراد کہہ رہے کہ ہمارے پاس کوئی کاروبار نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ معیشت اور احتساب کے حوالے سے یہ بدترین سال ہے ، حکومت اور اپوزیشن کیلئے یہ بدترین سال ثابت ہوا ہے ۔

چودھری منظور کا کہنا تھا کہ سادہ ترامیم کبھی بھی پائیدار نہیں ہوتیں ، اگر حکومت نے نیب قوانین میں ترمیم کرنی تھی تو فاروق ایچ نائیک کا بل پارلیمنٹ میں لایا جاتا ۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی تاریخ اٹھا کر دیکھ لیں ہر کوئی کہتاہے کہ ہم کو بدترین معیشت ملی ہے ، سوال یہ ہے کہ تحریک انصاف نے چھ ماہ مانگے تھے اورکہا تھا کہ احتساب ہم سے شروع ہوگا اور اب احتساب کو بھی فارغ کردیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں وزارت اعلیٰ کے دو امیدوار تھے ، ان کوبھی فارغ کردیا ، اب کو ئی چوں بھی نہیں کررہا ۔حکومت نے 13ہزار ارب روپے قرضہ لے لیاہے ۔

مزید : قومی


loading...