چوہدری محمدسرور نے وفاقی محکموں کے صوبائی سر براہان اور ریجنل افسران کواہم ٹاسک دے دیا

چوہدری محمدسرور نے وفاقی محکموں کے صوبائی سر براہان اور ریجنل افسران کواہم ...
چوہدری محمدسرور نے وفاقی محکموں کے صوبائی سر براہان اور ریجنل افسران کواہم ٹاسک دے دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر وفاقی محکموں کے صوبائی سربراہان کے اجلاس کی گورنر ہاوس میں صدارت کی۔ اجلاس میں وفاقی محکموں کے صوبائی سربراہان سمیت 107سے زائد افسران نے شرکت کی جس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران گور نر پنجاب نے کہا کہ وفاقی محکموں کے درمیان بہت ایشوز کے حوالے سے رابطوں کا فقدان ہے مگر انشاءاللہ ہم اس مسئلے کو جلد حل کر دیں گے۔ایک سوال کے جواب میں گور نر پنجاب نے کہا کہ ہم نے تمام افسران پر واضح کرد یا ہے کہ وفاقی محکموں میں عوامی شکایات پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ تمام محکموں میں سزا اور جزا کو بھی ہر سطح پر یقینی بنایا جائے گا جبکہ ناقص کا کردگی دکھانیوالوں کے خلاف حکومت ایکشن لے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہر تین ماہ بعد میں خود ان افسران کی کار کردگی کا جائزہ لوں گا اور اسکی رپورٹ وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعظم ہاوس میں قائم پر ائم منسٹر پر فارمنس ڈلیوری یونٹ کو بھی ارسال کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مَیں پنجاب کے تمام ڈویژن میں بھی جاوں گا اور اراکین اسمبلی کے ہمراہ وفاقی محکموں کے افسران سے ملاقاتیں کروں گا تاکہ عوامی شکایت کو تر جیحی بنیادوں پر حل کیا جاسکے۔
گورنر پنجاب نے کہا کہ 2سالوں کے دوران وزیر اعظم عمران خان کے قائم کردہ سٹیز ن پورٹل پر 30لاکھ سے زائد شکایت موصول ہوئیں ہیں اور انکے حل کا تناسب 96فیصد سے زائد رہا ہے مگر اب انشاءاللہ ہم آئندہ چھ ماہ کے دوران یہ کوشش کریں گے کہ مسائل کو100فیصد حل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اب وفاقی محکموں کے صوبائی سر بر اہان اور افسران کو یہ بتانا ہوگا کہ جو شکایت حل نہیں ہوسکیں اسکی وجوہات کیا ہیں اور ان کے ذمہ دار کون لوگ ہیں۔ چوہدری محمدسرور نے کہا کہ کرپشن کے خاتمے کے حوالے سے بھی حکومت کی واضح پالیسی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کر پشن کر نیوالوں کوکسی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا جب بھی کرپشن کا کوئی معاملہ سامنے آتا ہے تو وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں حکومت نہ صرف اس کا نوٹس لیتی ہے بلکہ اسکی انکوائری کرواکر ذمہ داروں کو بھی قوم کے سامنے لایاجاتا ہے اور آئین وقانون کے مطابق انکے خلاف ایکشن لیتے ہیں۔

مزید :

قومی -