اجتماعی زیادتی،ایک اور افسوسناک واردات

اجتماعی زیادتی،ایک اور افسوسناک واردات

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


فاروق آباد تھانہ صدر کے علاقے میں ایک اور گھناؤنی واردات ہو گئی، ڈاکوؤں نے بارات میں جانے والے ایک پورے گھر کو لوٹ کر ان کی 17سالہ بچی کی عزت بھی تار تار کر دی، یہ اپنی نوعیت کی دوسری واردات ہے۔ لاہور، سیالکوٹ موٹروے بائی پاس پر  ہونے والی زیادتی سے مماثلت رکھتی ہے۔اس وقوعہ پر میڈیا اور اہم شخصیات کے نوٹس کی وجہ سے تفتیش ہوئی ملزم بھی گرفتار کر لئے گئے، یہاں پولیس کا سلوک روایتی بیان کیا گیا۔ شیخوپورہ بیورو کی اطلاع کے مطابق خانقاہ ڈوگراں سے مسیحی فیملی ککڑ گل گاؤں رکشا پر آ رہی تھی کہ سیم نالہ کے موٹروے والے پل پر مسلح ڈاکوؤں نے رکشا روک کر ان کو گھیر لیا، نقدی اور موبائل چھیننے کے بعد سب کو رسیوں سے باندھ دیا اور 17سالہ لڑکی کو کھینچ کر جھاڑیوں میں لے گئے اور اجتماعی زیادتی کی، اور بندھے لوگ دیکھتے رہ گئے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا اور ڈی آئی جی نے بتایا کہ پولیس متحرک ہو چکی اور ملزم تلاش کر لئے جائیں گے۔ پہلا جرم تو رات کی تاریکی میں ہوا اور جگہ بھی ویران تھی، لیکن یہ واردات روشنی میں ہوئی اور یہ مقام بھی زیادہ آمدو رفت والا ہے۔ اس وقوعہ سے ایک بار پھر عدم تحفظ کا احساس بڑھ گیا، ابھی دو روز قبل ہی لاہور کے نواحی علاقے میں ایک سات سالہ بچی سے زیادتی اور اُسے قتل کرنے والے دو چھوٹی عمر کے لڑکے گرفتار کر لئے گئے، ایسی ہی اور وارداتیں بھی جاری ہیں، تمام تر دعوؤں کے باوجود یہ سلسلہ رُک نہیں سکا، شہری اس پر غم و غصہ کا اظہار بھی کر رہے ہیں، ایک بار پھر گذارش کہ عوامل اور وجوہات پر بھی غور کیا جائے کہ قانون نافذ ہو جانے سے بھی مجرموں کو خوف لاحق نہیں ہوا۔

مزید :

رائے -اداریہ -