کاشتکاروں کی ترقی اولین ترجیحات میں شامل ہے، خلیق الرحمان

کاشتکاروں کی ترقی اولین ترجیحات میں شامل ہے، خلیق الرحمان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبائی مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے کہا ہے کہ گنے کے کاشتکاروں کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے۔ شوگر ملز انڈسٹری کو ملک کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت حاصل ہے۔ کاشتکاروں کے مسائل حل نہ ہونے سے یہ انڈسٹری تباہی کے دہانے پر پہنچ جائیگی۔ مرکزی اور صوبائی حکومتیں چینی،آٹے اور دیگر ضروریات زندگی کی قیمتیں کنٹرول کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھارہی ہیں۔ محکمہ خوراک اور ضلعی انتظامیہ باہمی اشتراک سے عوام کو سبسڈائزڈ آٹا فراہم کرنے کے لئے صوبہ بھر میں اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈیرہ اسماعیل خان میں گنے کے کاشتکاروں،ملز مالکان کے ساتھ ملاقات کے موقع پر کیا۔ اس موقع پر وفاقی وزیرامورکشمیر و گلگت بلتستان سردار علی آمین گنڈاپور،شوگر کین کمشنر خیبر پختونخوا محمد زبیر،ڈپٹی کشمیر ڈیرہ اسماعیل خان،ڈپٹی کمشنر ڈیرہ اسماعیل خان عارف اللہ خان سمیت محکمہ خوراک اور دیگر محکموں کے افسران نے شرکت کی۔  گنے کے کاشتکاروں نے اپنے تمام مسائل مشیر خوراک کے سامنے بیان کئے جس کو حل کرنے کے حوالے سے مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے مسائل فوری حل کرانے کی ہدایات جاری کئیں۔ مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے کہا کہ بین الاضلاعی اور بین الصوبائی مسائل کو خوش اسلوبی سے حل کیا جائیگا۔ کاشتکار براہ راست ملز کے ساتھ روزگار کریں اور کسی درمیانی عوامل کو بیچ میں نہ لائیں۔ کاشتکار خوشحال ہوگا تو ملک خوشحال ہوگا اور ملک ترقی کریگا۔ انہوں نے کہا کہ صوبہ بھر میں اشیائے ضروریہ کی قیمتیں کنٹرول کرنے کے لئے وزیراعظم عمران خان کی ہدایات پر ٹھوس بنیادوں پر کام ہورہا ہے۔ ضلعی انتظامیہ اور محکمہ خوراک کی ٹیمیں دن رات کام کر رہی ہیں۔ مافیا کے خلاف منظم طریقے سے کام ہورہا ہے اور عوام کو سہولیات کی فراہمی میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کیا جائیگا۔اس موقع پر کاشتکاروں نے صوبائی مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن کا شکریہ ادا کیا