اچھی کارکردگی پر افسران کی حوصلہ افزائی ،خراب پر باز پرس ہو گی ،شہباز شریف

اچھی کارکردگی پر افسران کی حوصلہ افزائی ،خراب پر باز پرس ہو گی ،شہباز شریف

  



 لاہور(پ ر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ تعلیم، صحت، امن عامہ اور دیگر سماجی شعبوں میں بہتری لانے کیلئے ضروری اصلاحات کی جا رہی ہیں تاکہ عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں میسر آ سکیں۔ عوام کو خدمات کی بہترین فراہمی کیلئے چیک اینڈ بیلنس کا موثر نظام انتہائی ضروری ہے، یہی وجہ ہے کہ پنجاب حکومت محکموں اور اداروں میں جزا اور سزا کا نظام متعارف کرا رہی ہے جس کا بنیادی مقصد اچھی کارکردگی دکھانے والے افسروں اور عملے کی حوصلہ افزائی جبکہ خراب کارکردگی دکھانے والے افسروں اور عملے کی بازپرس کرنا ہے۔ ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تعلیم، صحت، امن عامہ اور دیگر سماجی شعبوں کے حوالے سے صوبائی اور ضلع کی سطح پر اہداف کا تعین کیا گیا ہے اور ان اہداف کے حصول کیلئے متعلقہ اداروں اور محکموں کو انتہائی فعال اور متحرک کردار ادا کرنا ہے۔ تعلیم اور صحت دو ایسے شعبے ہیں جن کا براہ راست تعلق عوام سے ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ ان دونوں شعبوں میں بہتری لانے کیلئے مقرر کردہ اہداف کو ہر صورت حاصل کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم، صحت، امن عامہ اور دیگر سماجی شعبوں کے حوالے سے جو ضلع اچھی کارکردگی دکھائے گا وہاں کے متعلقہ انتظامی افسران اور عملے کی بھرپور حوصلہ افزائی کی جائے گی جبکہ خراب کارکردگی پر بازپرس اور احتساب ہوگا کیونکہ عوام کی توقعات پر پورا اترنے کیلئے ایک ٹیم ورک کے طور پر کام کرنا ہوگا اور نتائج دکھانا ہوں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہاہے کہ صنعتوں کا پہیہ رواں دواں رکھنے اور ملک کی تیزرفتار ترقی کے لئے توانائی بحران کا خاتمہ ناگزیر ہے۔وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں حکومت توانائی بحران کے جلد خاتمے کے لئے سنجیدگی سے اقدامات کررہی ہے۔توانائی کی کمی کے مسئلے نے تعلیم، صحت، زراعت اور دیگر سماجی شعبوں کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ توانائی بحران کے خاتمے کیلئے حکومت کی مخلصانہ کاوشیں ضرور رنگ لائیں گی او رملک کو توانائی کی قلت کے مسئلے سے نجات ملے گی۔پنجاب حکومت نے صوبے میں ایل این جی پارک کے قیام کی منصوبہ بندی کی ہے جس سے ایک ہزار میگا واٹ بجلی حاصل ہوگی۔وہ یہاں اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے جس میں توانائی کے مختلف منصوبوں پر پیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیا گیا ۔اجلاس کے دوران وزیراعلیٰ کو توانائی کے مختلف منصوبوں کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ معاون خصوصی عزم الحق، چیئرمین پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی ، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، ایڈیشنل چیف سیکرٹری توانائی،ایم ڈی نیسپاک، سیکرٹری آبپاشی ، ایم ڈی سوئی ناردن گیس پائپ لائنز لمٹیڈ اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پنجاب حکومت کوئلے ، ہائیڈل، سولر، بائیو ماس، بائیوگیس اور دیگر متبادل ذرائع سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر کام کررہی ہے۔ قائداعظم سولر پارک بہاولپور میں 100میگا واٹ کا سولر منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے ۔پنجاب حکومت100میگاواٹ کا یہ سولر منصوبہ اپنے وسائل سے لگا رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ توانائی بحران کا خاتمہ حکومت کی سرفہرست ترجیحات میں شامل ہے اور توانائی کی کمی کے مسئلے سے نمٹنے کے لئے موثر اقدامات کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ پنجاب میں ایل این جی سے ایک ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔ایل این جی پارک کے منصوبے سے سستے ذرائع سے بجلی کاحصول ممکن ہوگا۔ترقیاتی منصوبوں کی شفاف اور برق رفتاری سے تکمیل پنجاب حکومت کی پالیسی ہے اور اسی حکمت عملی کے تحت توانائی کے منصوبوں پر کام کررہے ہیں۔توانائی منصوبوں کی جلد تکمیل ترجیحات میں شامل ہے۔ انہوں نے کہاکہ توانائی کی کمی پر قابو پانے کے لئے ایل این جی درآمد کی جا رہی ہے۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ تمام متعلقہ ادارے اور محکمے توانائی کے مختلف منصوبوں کی جلد تکمیل یقینی بنانے کیلئے مربوط کوآرڈینیشن کے تحت کام کریں ۔قوم کا ایک ایک لمحہ قیمتی ہے اور اس ضمن میں ہمیں تیز رفتاری سے آگے بڑھنا ہے۔ توانائی کے منصوبوں میں کسی بھی قسم کی غفلت یا کوتاہی کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی۔

مزید : صفحہ اول


loading...