کوئی سادہ لباس اہلکار کسی کو گرفتار نہ کرے :وزیراعظم

کوئی سادہ لباس اہلکار کسی کو گرفتار نہ کرے :وزیراعظم
کوئی سادہ لباس اہلکار کسی کو گرفتار نہ کرے :وزیراعظم

  



کراچی(ویب ڈیسک)وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت اجلاس میں ایم کیو ایم کے رہنما حیدر عباس رضوی نے کہا کہ چند پولیس افسر کراچی میں سادہ کپڑوں اور بغیر نمبر پلیٹ والی گاڑیوں میں اپنی ٹیمیں چلا رہے ہیں جو ایم کیو ایم کے کارکنوں کو بھی اغوا کر رہے ہیں جس پر وزیراعظم نے وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کو مخاطب کر کے کہا کہ یہ طے ہوا تھا کہ کراچی میں کسی بھی شخص کو سادہ لباس اہلکار گرفتار نہیں کریں گے ، اس بات کو ہر صورت یقینی بنائیں، جو بھی ملزم یا مجرم ہے اسے گرفتار کر کے عدالت میں پیش کریں عدالت اس کا فیصلہ کرے گی۔ وزیراعظم نے پی پی اور ایم کیو ایم کے رہنماو¿ں کو مخاطب کر کے کہا کہ اسلام آباد سے کراچی آتے ہوئے اخبار میں پڑھا کہ وزیراعظم پی پی ایم کیو ایم رنجشیں ختم کروانے جا رہے ہیں، کیا آپ لوگوں کے درمیان کوئی رنجشیں ہیں ؟وزیراعظم کے سوال پر متحدہ قومی موومنٹ اور پیپلزپارٹی کا کوئی رہنما کچھ نہ بولا۔ ایک موقع پر صوبائی وزیر اطلاعات شرجیل میمن نے وزیراعظم کو انتہائی ادب سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ پولیس کی کاوشیں قابل ستائش ہیں وہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جانوں کے نذرانے پیش کر رہی ہے جس پر وزیراعظم نے جواب دیا کہ وہ شرجیل میمن کو اکثر ٹی وی پر دیکھتے ہیں، شرجیل میمن صاحب غصہ تھوڑا کم کیا کریں۔ وزیر خزانہ سندھ مراد علی شاہ ایک گھنٹہ کے اجلاس میں بار بار ہاتھ اٹھاتے ہی رہے تاہم وزیراعظم نے انہیں موقع ہی نہ دیا۔ اجلاس میں ڈی جی رینجرز میجر جنرل بلال اکبر خاموش بیٹھے رہے تاہم اجلاس کے بعد انہوں نے وزیراعظم سے علیحدہ ملاقات کی۔

مزید : کراچی