پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس میں مزید پانچ فیصداضافہ

پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس میں مزید پانچ فیصداضافہ
پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس میں مزید پانچ فیصداضافہ

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے اعلان کے ساتھ ہی سیلز ٹیکس میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کردیاگیاہے جس کے بعد پٹرولیم مصنوعات پر22فیصد سے بڑھ کر سیلز ٹیکس 27فیصد ہوگیاہے ۔

ملکی تاریخ میں یہ پہلی بار ہوا ہے کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی قیادت میں ایف بی آر نے پٹرولیم مصنوعات پر اس تناسب سے ٹیکس عائد کیا ہے۔ماضی میں کبھی بھی کسی حکومت نے اس تناسب کے ساتھ کسی بھی چیز پر سیلز ٹیکس نہیں عائد کیا۔ وزیر اعظم نواز شریف نے بھی اس بات کا اقرار کیا ہے کہ پٹرول کی قیمت میں عوام کو 10روپے تک رعایت ملنی تھی لیکن اڑھائی روپے سے زائد ٹیکس لگایا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایف بی آر کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات پرسیلزٹیکس کی شرح میں5 فیصداضافہ کردیاگیاہے جس کے بعد پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کی شرح22فیصد سے بڑھ کر 27 فیصد ہوگئی ہے ، سیلز ٹیکس بڑھنے سے عوام کو ملنے والے ریلیف میں کمی آئے گی ۔ نئے ٹیکس کی وصولی یکم فروری یعنی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے اطلاق کے ساتھ ہی شروع ہوگی ۔

ذرائع نے بتایاکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی وجہ سے ریونیو کا بہت نقصان ہورہاہے اس لیے یہ فیصلہ کیاگیاکہ پٹرولیم منصوعات پر سیلز ٹیکس کی شرح میں مزید 5 فیصد تک اضافہ کردیا جائے اور ہونیوالے خسارے کو پوراکرنے کی کوشش کی جائے ۔

یادرہے کہ اس سے قبل بھی پٹرولیم مصنوعات پر پانچ فیصد سیلز ٹیکس میں اضافہ کیا جاچکاہے جس کے بعد  یہ ٹیکس 17 فیصد سے بڑھ کر 22 فیصد ہوگیا تھا۔

مزید : بزنس /اہم خبریں


loading...