ایم کیوایم نے کارکنوں کے قتل کی تحقیقات کے لیے بنایا گیا جوڈیشل کمیشن مسترد کر دیا

ایم کیوایم نے کارکنوں کے قتل کی تحقیقات کے لیے بنایا گیا جوڈیشل کمیشن مسترد ...
 ایم کیوایم نے کارکنوں کے قتل کی تحقیقات کے لیے بنایا گیا جوڈیشل کمیشن مسترد کر دیا

  



کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)متحدہ قومی موومنٹ نے کارکنوں کے قتل کی تحقیقات کے لیے سندھ حکومت کا جوڈیشل کمیشن مسترد کردیاہے اور حاضرسروس جج کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن بنانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ایم کیوایم کے رہنما قمر منصور نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سند ھ میں اس وقت جنگل کا قانون رائج ہے اگر حکومت سندھ کی نیت ٹھیک ہوتی تو تحقیقات کے لیے سندھ ہائیکورٹ کو خط لکھتی لیکن ایسا کچھ نہیں کیاگیا ۔انہوں نے کہاکہ سند ھ حکومت کی جانب سے بنانے گئے جوڈیشل کمیشن کو ایم کیوایم مسترد کرتی ہے اور اگر سندھ حکومت جوڈیشل کمیشن بنانا چاہتی ہے تو حاضر سروس ججوں کی سربراہی میں بنائے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نواز شریف کراچی آئے جس پر ایم کیوایم ان کی شکرگزارہے اور وزیراعظم نوازشریف سے گزارش ہے کہ وہ ایم کیوایم کے اکارکنوں کے ماورائے عدالت قتل کے لیے سپریم کورٹ آف پاکستان کو خط لکھیں تاکہ غیر جانبدار تحقیقات کی جاسکیں اور جب جوڈیشل کمیشن عمل میں آیا تومتاثرین کو جوڈیشل کمیشن کے سامنے بیان دینے کے لیے پیش کریں گے۔ اس موقع پر ایم کیوایم کے رہنما فاروق ستار نے کہا کہ کچھ لوگ کارکنا ن کو اغواکر کے لے جاتے ہیں اور بعد میں ان کی لاشیں ملتی ہیں جہاں تک بات ہے ٹارگیڈ آپریشن کی بات ہے اس سے فائدہ تو بہت ہواہے لیکن اس کے نقصان بھی بہت زیادہ ہو رہے ہیں اور سادہ لوح لباس میں ملبوس کچھ لوگوں نے ایم کیوایم کے کارکنوں کو قتل کیا، ابھی تک ایم کیو ایم کے 20کارکنا ن لاپتہ ہیں جن کا کوئی سراغ ہی نہیں مل رہا۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...