بندوق کی نوک پر نوجوان لڑکی کی بے بس مر د کے ساتھ جنسی زیادتی

بندوق کی نوک پر نوجوان لڑکی کی بے بس مر د کے ساتھ جنسی زیادتی
بندوق کی نوک پر نوجوان لڑکی کی بے بس مر د کے ساتھ جنسی زیادتی

  



جوہانسبرگ (نیوز ڈیسک) جنسی زیادتی کا شکار بننے والے عمر بھر اپنے ساتھ ہونے والے خوفناک ظلم کو بھلا نہیں پاتے مگر جنوبی افریقہ کے ایک 21 سالہ نوجوان کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتی سے بہت لطف اندوز ہوا۔ نوجوان نے پولیس کو بتایا کہ وہ اپنے گھر سے دکان کی طرف جا رہا تھا کہ اس کے قریب سفید رنگ کی ٹویوٹا گاڑی آ کر رکی جس میں تین خوبرو خواتین سوار تھیں۔

مزید پڑھیں :کامیاب شادی چاہتے ہیں تو آپ تسلی کر لیں یہ ایک صفت آپ کے ہمسفر میں تو نہیں

ایک خاتون نے اسے کہا کہ وہ راستہ بھول گئی ہیں اور جب وہ گاڑی کے پاس پہنچا تو دوسری نے اس پر پستول تان کر اسے اندر بیٹھنے کو کہا۔ نوجوان کا کہنا ہے کہ خواتین نے شاہراہ R114 پر ایک ویران علاقے میں گاڑی کھڑی کی اور پچھلی سیٹ پر بیٹھی خاتون نے اسے برہنہ ہونے کا حکم دیا۔ نوجوان نے پولیس کو بتایا کہ خواتین نے بذور اسلحہ اس کےساتھ زیادتی کی اور پھر اسے ویران علاقے میں اتار کر گاڑی بھگا لے گئیں۔ اس نے بتایا کہ خواتین کی عمریں 30 اور 40 سال کے درمیان تھیں اور وہ حلیے اور وضع قطع سے طبقہ امراءکی معلوم ہوتی تھیں۔ یہ نوجوان اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی پر غمزدہ ہونے کی بجائے خوش ہے مگر متفکر ہے کہ کہیں وہ کسی خوفناک جنسی بیماری میں مبتلا نہ ہو جائے۔ واضح رہے کہ جنوبی افریقہ میں اس سے پہلے بھی کئی دفعہ خواتین کی نوجوانوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات سامنے آ چکے ہیں۔ پولیس نے زیادتی کا مقدمہ درج کر لیا ہے اور ملزم خواتین کی تلاش جاری ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...