پی آئی اے کی نجکاری پردانیال عزیز اور سلیم مانڈوی والا میں جھڑپ

پی آئی اے کی نجکاری پردانیال عزیز اور سلیم مانڈوی والا میں جھڑپ

اسلام آباد (آن لائن) پی آئی اے کی نجکاری کے معاملے پر وزیر نجکاری دانیال عزیز اور سلیم مانڈووی والا کے مابین شدید جھڑپ ہوئی ہے‘ حکومت کو قومی ادارے اونے پونے داموں فروخت کی ہرگز اجازت نہیں دیں گے اور نہ نجکاری کے نام پر ہزاروں لوگوں کو بے روزگار ہونے دیں گے۔ حکومت ہوش کے ناخن لے اور قومی اداروں کو من پسند افراد میں بانٹنے سے باز رہے۔ جبکہ سٹیل ملز کے حوالے سے معاملات سندھ حکومت کے ساتھ طے کئے جائیں اگر سندھ حکومت کو اعتماد میں لئے بغیر سٹیل ملز کی نجکاری کی گئی یا لیز پر دی گئی تو اس سے لیز یا نجکاری کا معاملہ لٹک جائے گا۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری میں وفاقی وزری نجکاری دانیال عزیز سلیم مانڈووی والا کے سوالات پر بھڑک اٹھے اور کہا کہ ریلوے کی نجکاری نہ کرنے کا مقصد ریلوے کے ذریعے کول پاور م نصوبوں کو کول کی ترسیل ہے ورنہ ریلوے کی بھی نجکاری کردی جاتی۔ کمیٹی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر محسن عزیز کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ وفاقی وزیر دانیال عزیز نے کمیٹی کو بتایا کہ ایس ایم ای (SME) بینک ‘ ماڑی پیٹرولیم پاکستان ‘ ستیل ملز اور پی آئی اے کی نجکاری کی جائے گی جبکہ فیسکو اور گوجرانوالہ الیکٹرک سپلائی کمپنی اور دو جینکوز جامشورو اور کیسکو کو پرائیوٹ کرنے کیلئے تیاری کی جارہی ہے پاور منصوبوں کی نجکاری میں نیپرا کے تحفظات ہیں نیپرا کئی سالوں کا ٹیرف نہیں دے رہا جس کی وجہ سے مشکلات پیدا ہورہی ہیں نیپرا نے جو ٹیرف دیا ہے اور ریکوری کور کرنا ممکن نہیں ہے پی آئی اے کا 350 ارب روپے خسارہ ہے پی آئی اے سے ائیر ٹرانسپورٹ کا کاروبار علیحدہ کریں گے۔

جھڑپ

مزید : علاقائی


loading...