سپریم کورٹ نے سو سال پرانے مقدمے کا فیصلہ سنادیا

سپریم کورٹ نے سو سال پرانے مقدمے کا فیصلہ سنادیا

اسلام آباد (آن لائن ) سپریم کورٹ نے سو سال پرانے مقدمے کا فیصلہ سنادیا ، عدالت نے چھپن سو کنال اراضی شریعت کے مطابق ورثا میں تقسیم کرنے کا حکم دیا۔ کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے تین رکنی بنچ نے کی ،تقسیم پاکستان سے قبل شہاب الدین کی ملکیتی زمین کا تنازعہ عدالتوں میں پہنچا اورقیام پاکستان کے بعد ملکی عدالتوں میں بھی کیس چلتا رہا۔خیرپور ٹامیوالی میں چھپن سو کنال اراضی کا کیس 1918 سے شروع ہوااور ٹرائل کورٹس سے معاملہ 2005 میں سپریم کورٹ آیاجہاں منگل کو سو سال کے پرانے مقدمے کا فیصلہ آگیا ، وکلاء کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے شریعت کے مطابق وراثت تقسیم کرنے کا حکم دیتے ہوئے قرار دیا کہ کسی کو بھی شرعی وراثتی حصے سے محروم نہیں کر رہی ، واضح رہے کہ مقدمے کے فریقین کی جابب سے چند ماہ قبل سپریم کورٹ کے احاطہ میں کیس کی سالگرہ بھی منائی گئی تھی ، مقدمے کے فریقین نے آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہ انیس سو اٹھارہ سے ہمار ا کیس عدالتوں میں چل رہا ہے ، چیف جسٹس نے میرٹ پر کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے ہمارے دل جیت لیے ہیں ہم چیف جسٹس کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ہیں چیف جسٹس سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس فیصلے پر عملدرآمد کرایا جائے کیوں کہ اس مقدمے کی پیروی میں ہماری تین نسلیں ختم ہوچکی ہیں ۔

مزید : علاقائی


loading...