62ایف کے تحت لوگوں کو ایک ہی طرح کی سزائیں ملیں: جہانگیر ترین

62ایف کے تحت لوگوں کو ایک ہی طرح کی سزائیں ملیں: جہانگیر ترین

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ آئین کا آرٹیکل 62 (ون) (ایف) بہت وسیع ہے ٗ 62 ایف کے تحت لوگوں کو ایک ہی طرح کی سزائیں دی گئی ہیں لیکن اب اس کی تشریح بھی ضروری ہے۔منگل کو سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات چیت کے دوران قانون کی تشریح کرتے ہوئے نااہل سابق ایم این اے جہانگیر ترین نے کہا کہ نواز شریف نے قطری خط دیا اور میں نے منی ٹریل دی لیکن میرا کیس ان سے مختلف ہے۔سپریم کورٹ کے باہر جہانگیر ترین نے کہا کہ آرٹیکل 62 (ون) (ایف) بہت وسیع ہے، 62 ایف کے تحت لوگوں کو ایک ہی طرح کی سزائیں ملی ہیں، لیکن میرے خیال میں آرٹیکل 62 کی تشریح کرنی پڑیگی۔انہوں نے کہا کہ جعلی ڈگری یا منی ٹریل پر نااہلی مختلف چیزیں ہیں کیونکہ انصاف کی عدالت ہے، ذاتیات اور شخصیات کا مسئلہ نہیں ہوتا۔جہانگیر ترین نے کہا کہ نواز شریف نے منی ٹریل نہیں دی ان کے اثاثے زیادہ ہیں، نااہلی کی وجہ کی بنیاد پر مدت کا تعین ہونا چاہیے۔ یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے 15 دسمبر 2017 کو مسلم لیگ (ن) کے رہنما حنیف عباسی کی جانب سے پی ٹی آئی رہنماؤں کی نااہلی اور پاکستان تحریک انصاف کی غیر ملکی فنڈنگ کیس کے خلاف دائر درخواستوں پر فیصلہ سناتے ہوئے عمران خان کے خلاف ان کی پٹیشن کو خارج کردیا جبکہ جہانگیر ترین کو آئین کے آرٹیکل 62 کے تحت نا اہل قرار دے دیا تھا۔

مزید : صفحہ آخر


loading...