اپنی سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے،ترجمان دفتر خارجہ

اپنی سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے،ترجمان دفتر خارجہ

اسلام آباد(صباح نیوز)ترجمان دفترخارجہ نے کہا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں 75ہزار شہریوں 6ہزار سیکیورٹی اہلکاروں نے قربانی دی ہے ۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلا ف جنگ میں پاکستانی معیشت کو 123ارب ڈالر کا نقصان ہوا ہے ۔ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ پاکستان تحریک طالبان افغانستان ، حقانی نیٹ ورک کو اپنی سرزمین استعمال نہیں کرنے دے گا ۔ پاکستان دہشتگردوں کے خلاف کارروائی جاری رکھے گا۔ افغانستان کے خلاف کسی بھی دہشتگرد کارروائی کیلئے اپنی سرزمین استعمال نہیں ہونے دیں گے ۔ ٹی ٹی اے اور حقانی نیٹ ورک سے تعلق رکھنے والے 27مشتبہ افراد کو افغانستان کے حوالے کیا ۔ مشتبہ افراد کو گزشتہ سال نومبر میں افغان حکام کے حوالے کیا گیا ۔ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہاہے پاکستان نے نومبر2017 میں تحریک طالبان افغانستان اور حقا نی نیٹ ورک کے مشتبہ 27 افراد کو افغانستان کے حوالے کیا۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر میں اپنے پیغام میں ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا پاکستان نے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں افسران اور جوانوں کی قربانیاں دی ہیں اور اس حوالے سے پاکستان کی شہادتوں کی شر ح پو ری دنیا میں بلند ترین ہے۔پاکستان نے انسداد دہشت گردی میں اپنے 75 ہزار شہری اور 6 ہزار سپاہیوں کی قربانی دی ہے۔ د ہشتگردی کیخلا ف جنگ میں پاکستان کو اقتصادی طور پر 123 ارب امریکی ڈالرز کا نقصان اٹھانا پڑا۔ پاکستان، تحریک طالبان افغا نستان اور حقانی نیٹ و ر ک کے کسی بھی مشتبہ عناصر کو افغانستان کیخلاف کسی بھی دہشت گردی کیلئے اپنی سرزمین کو استعمال سے روکنے کی کوششیں کر رہا ہے۔ اس ضمن میں تحریک طالبان افغانستان اور حقانی نیٹ ورک سے تعلق کے شبہ میں 27 افراد کو افغانستان کے حوالے کیا ۔

دفتر خارجہ

مزید : صفحہ اول


loading...