سپلائی دینے والی کمپنی نے زکریا یونیورسٹی کے ڈرون کو کمائی کا ذریعہ بنالیا

سپلائی دینے والی کمپنی نے زکریا یونیورسٹی کے ڈرون کو کمائی کا ذریعہ بنالیا

ملتان(جنرل رپورٹر)سپلائی دینے والی کمپنی نے زکریا یونیورسٹی کے ڈرون کو کمائی کا ذریعہ بنالیا تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی حکام نے کیمپس میں ہونے والے ہنگاموں اور لڑائی جھگڑوں کی کوریج کے لئے ڈرون کیمرہ خریدا تھا جس کو ایک مقامی کمپنی نے فراہم کیا جس پر الزام ہے کہ وہ سابق رجسٹرار کے پسندیدہ ٹھیکدار کی ہے جس کو انہوں نے خلاف قانون خود بھی ٹھیکے دئے ، اس کمپنی کے(بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

مالک نے یونیورسٹی کو ڈرون بغیر ریموٹ کے دے کر 50ہزار کا ٹیکہ لگایا، انتظامیہ کو پہلے کہا کہ ان کے ا?دمیوں کو ڈرون چلانے کا تجربہ نہیں ہے اس لئے لاہور میں ٹریننگ دلائی جائے جس پر دو سکیورٹی اہلکاروں کو ٹریننگ دلائی گئی جنہوں نے واپس ا?کر انکشاف کیا کہ یونیورسٹی کے ڈرون کا تو ریموٹ ہی نہیں ہے ، جس پر کمپنی مالک سے رابطہ کیا گیا توان کو موقف تھا کہ مجھ سے ڈرون خریدا گیا ہے ریموٹ کے پیسے الگ سے دینے پڑیں گے ، جبکہ مارکیٹ میں ڈرون ریموٹ سمیت ملتا ہے ،سکیورٹی اداروں کے دباو پر سستے والا ڈرون مہنگے داموں خریدہ اب کمپنی مالک مزید پیسے کمانے کیلئے ریموٹ کے پیسے مانگ رہا ہے ، ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کمپنی کو پرچیز ا?فس کی بھی مکمل ا?شیر باد حاصل ہے جو ہر ا?رڈر اس کو دیتی ہے ، دوسری طرف یونیورسٹی حکام نے ریموٹ خریدنے کا بھی فیصلہ کرلیا ہے تاکے ڈرون کو چلایا جاسکے جبکہ یونیورسٹی حکام نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس معاملے کو نوٹس لیں انکوائری کراکے کمپنی کو بلیک لسٹ کریں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...