ڈاکٹر وسیم اختر نے تعلیمی اداروں میں قرآن پاک کی تعلیم لازمی قرار دینے کا بل پنجاب اسمبلی میں پیش کر دیا

ڈاکٹر وسیم اختر نے تعلیمی اداروں میں قرآن پاک کی تعلیم لازمی قرار دینے کا بل ...

بہاولپور (بیورورپورٹ )پنجاب اسمبلی میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر سید وسیم اختر نے تعلیمی اداروں میں قرآن پاک کی تعلیم لازم قرار دینے کا بل پنجاب اسمبلی میں پیش کر دیا(بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

۔حکومت کی جانب سے بل کی مخالفت نہ کئے جانے پر سپیکر رانا محمد اقبال نے بل غور و غوض کیلئے متعلقہ سٹینڈنگ کمیٹی کے سپرد کر تے ہوئے دو ماہ کے اندر رپورٹ طلب کر لی ۔ تا ہم ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہا کہ اسمبلیوں کی مدت ختم ہونے کو ہے اس لئے سٹینڈنگ کمیٹی سے دوماہ کی بجائے ایک ماہ کے اندر رپورٹ طلب کی جائے جس پر صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ نے کہا کہ اسمبلیاں دو ماہ میں ختم نہیں ہو رہیں ابھی بھی ان کی بقیہ عمر دو ماہ سے زائد ہے تا ہم کمیٹی اگر اپنی سفارشات 15 دن میں بھی مکمل کر لیتی ہے تو وہ رپورٹ ایوان میں پیش کر سکتی ہے ۔صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود احمد نے کہا کہ وہ بل کی مخالفت نہیں کریں گے تا ہم پنجاب کے تعلیمی اداروں میں تیسری سے آٹھویں جماعت تک پہلے ہی مسلم بچوں کو ناظرہ کی تعلیم دی جا رہی ہے اور یہ نصاب میں شامل ہے جبکہ آئندہ سال نئے نصاب میں ناظرہ کے ساتھ ساتھ قرآن پاک کے ترجمہ کو بھی شامل کیا گیا ہے ۔ انہوں نے سپیکر سے استدعا کی کہ کمیٹی کو پاور فل بنایا جائے جس میں نہ صرف ایوان میں شامل علماء کرام اس میں شامل ہوں بلکہ دیگر ارکان بھی چاہیں تو انہیں بھی شامل کیا جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...