ڈاکٹرعاصم کی تقرری کے خلاف سندھ اسمبلی میں تحریک التوا جمع

ڈاکٹرعاصم کی تقرری کے خلاف سندھ اسمبلی میں تحریک التوا جمع

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر خرم شیر زمان نے ڈاکٹر عاصم حسین کی بطور چیئرمین سندھ ہائیر ایجوکیشن کمیشن تقرری کے خلاف تحریک التوا سندھ اسمبلی میں جمع کرادی ۔تحریک التوا جمع کرانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خرم شیرزمان نے کہاکہ ڈاکٹر عاصم پر 462ارب روپے کرپشن کے الزامات ہیں یہ سندھ کے عوام کی بدنصیبی ہے جبکہ پیپلزپارٹی کی حکومت کے لئے ڈوب مرنے کا مقام ہے ۔ پیپلزپارٹی کی پالیسی ہے جو جتنا بڑا چمچہ ہوگا اسے اتنا ہی بڑا عہدہ دیا جائیگا ڈاکٹر عاصم کی تقرری سندھ حکومت کے لئے شرمندگی کا باعث ہے۔انہوں نے سوال کیا کہ کیا ڈاکٹر عاصم کی تقرری ہی وزیراعلی سندھ کی تعلیمی ایمرجنسی ہے ؟ انکی تقرری کے خلاف سندھ اسمبلی سمیت دیگر فورمز پر آواز بلند کرینگے۔پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر خرم شیرزمان نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر عدالت کا دروازہ بھی کھٹکھٹایئے گے۔ ایسا شخص جسکے خلاف نیب سمیت دیگر اداروں میں کرپشن کے کیسز ہوں اسے بڑے تعلیمی ادارے کا سربراہ بنانا کہاں کا انصاف ہے ؟انہوں نے کہا کہ کیا سندھ حکومت کے پاس کوئی پڑھا لکھا یا قابل شخص نہیں جسے ایچ ای سی کا چیئرمین بنایا جاتا؟ پیپلزپارٹی کے پاس میرٹ نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔اگر انکے پاس میرٹ ہوتا تو راو انوار جیسے شخص کو ملیر کا ایس ایس پی لگایا جاتا؟ ڈاکٹر عاصم پر دہشت گردوں کا علاج کرنے کا بھی الزام ہے۔

Back

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...