مختلف قوانین وضوابط کو سہل بنانے اور اختیارات نچلی سطح پر منتقل کرنے میں ترامیم

مختلف قوانین وضوابط کو سہل بنانے اور اختیارات نچلی سطح پر منتقل کرنے میں ...

پشاور( سٹاف رپورٹر)چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا کی ہدایات کی روشنی میں اسٹیبلشمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے مختلف قوانین و ضوابط کو سہل کرنے اور اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل کرنے کے لئے متعدد ترامیم کی ہیں جنکی بدولت سرکاری محکموں میں کام کی رفتار تیز ہوگی اور لوگو ں کے مسائل نچلی سطح پر انتہائی سرعت کے ساتھ انجام پائیں گے۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ بنیادی طور پر ان قوانین اور ضوابط میں ترامیم لائی گئی ہیں جوروزمرہ کے معاملا ت میں لاگو ہو تے ہیں جیسا کہ پنشن کی منظوری اورسنیارٹی لسٹوں کی منظوری و اشاعت وغیر ہ ۔انضباطی قوانین میں بھی ترامیم لائی گئی ہیں اب بے ضابطگی کی صورت میں چیف سیکرٹری کی سطح پر انضباطی عمل کا آغاز ہو گا۔ اگر چہ وزیر اعلیٰ صاحب انکوائری مکمل ہونے پر اور ملزم کو سننے کے بعد حکم جاری فرمائیں گے اور ان کے فیصلے کے خلاف اپیل کا حق بدستور برقرار رہے گا۔پراجیکٹ پالیسی کو تنخواہ ، مراعات ، بھرتی وغیرہ کے لحا ظ سے معروضی حالات سے مکمل ہم آہنگ کر دیا گیا ہے ۔پروموشن پالیسی کو ملازمین دوست بنا دیا گیا ہے اور چھٹی گزار کر آنے والے افسران و عملہ اپنی ملازمت پر آنے کے وقت کے بعد سے ایک سال کی کارکردگی کی بنیاد پر ترقی پا سکیں گے۔ سنیارٹی لسٹوں کی منظوری ‘ سروس رولز کی سفارشات کی منظوری اورگریڈ بیس (20) اور اس سے نیچے کے افسران کی پنشن کی منظوری جیسے معاملات چیف سیکرٹری سے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ اور جملہ سیکرٹریز کو تفویض کر دیے گئے ہیں۔ پروبیشن کے خاتمے کے نظام کو سہل اور خود کار بنا دیا گیا ہے۔ اسکے ساتھ ساتھ محکمہ کی سطح پر اور صوبائی سطح پر کمیٹیاں بنا دی گئی ہیں جنکو یہ اختیار دیا گیا ہے کو وہ عدالتوں /سروس ٹریبونل کے اندر ملازمین کے زیر التواء مقدمات کا جائزہ لے کر منصفانہ طریقے سے حل کر یں۔ مزید برآں ریٹائرڈ کلاس فور ملازمین کے بچوں کے کوٹہ میں دستیاب آسامیوں کی تعداد اور امیدواروں کی متعلقہ فہرستیں محکمہ جات کے نوٹس بورڈ پر آویزاں کر نے احکامات بھی صادر کئے جا چکے ہیں مندرجہ بالا اقدمات کی بنیاد پر اس بات کا قوی امکان ہے کہ سرکاری دفاتر کی استعداد کار بڑھے گی، ملازمین کے مسائل جلد اور منصفانہ طریقے سے حل ہوں گے اور انکا حوصلہ بلند ہوگا جسکا براہ راست اثر انکی کارکردگی پر پڑے گا اور سر وس ڈیلوری بہتر ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...