چیف جسٹس بنانے کا اختیار صدرووزیراعظم کے پاس ہونا چاہئے،28 جولائی کا فیصلہ پاکستان اور جمہوریت کیخلاف سازش ہے، کیپٹن صفدر

چیف جسٹس بنانے کا اختیار صدرووزیراعظم کے پاس ہونا چاہئے،28 جولائی کا فیصلہ ...
چیف جسٹس بنانے کا اختیار صدرووزیراعظم کے پاس ہونا چاہئے،28 جولائی کا فیصلہ پاکستان اور جمہوریت کیخلاف سازش ہے، کیپٹن صفدر

  


پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما کیپٹن (ر)صفدر نے کہا ہے کہ چیف جسٹس بنانے کا اختیار صدر اور وزیراعظم کے پاس ہونا چاہئے، 28 جولائی کا فیصلہ پاکستان اور جمہوریت کیخلاف سازش ہے،سازشیوں کا مرکزی کردار عمران خان ہے،نواز شریف دو قومی نظریے کیلئے عدل مانگ رہے ہیں

پشاور آمد پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیپٹن صفدر نے کہا کہ 3جنگوں نے پاکستان کا کچھ نہیں بگاڑا،جس معاشرے میں عدل نہ ہو وہ ترقی نہیں کرسکتا،چیف جسٹس بنانے کا اختیار صدر اور وزیراعظم کے پاس ہونا چاہئے،کون ہوتے ہیں 5 لوگ جو عوام کیخلاف فیصلہ دیں،انہوںنے کہاکہ مسلم لیگ (ن) وفاق کی علامت ہے،وفاقی حکومت نے خیبر پختونخوا میں بہت کام کیا، اب خیبر پختونخوا میں بڑے بڑے جلسے ہوں گے اور2018 کے الیکشن مسلم لیگ ن جیتے گی اورامیر مقام خیبر پختونخوا کے آئندہ وزیراعلیٰ ہونگے۔

کیپٹن (ر)صفدر نے کہا کہ خیبر پختونخوا نے ہیلی کاپٹر اتنا استعمال کیا کہ روسی کمپنی کہہ رہی ہے کہ ٹائم پورا کرگیا،انہوں نے کہا کہ روایتی طور پر خیبر پختونخوا پولیس بہت اچھی ہے،بلین ٹری منصوبے کا سنا ہمیں کوئی درخت نظر نہیں آتا،کنٹینر پرناچنے والوں کو دھرنوں سے فرصت نہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور


loading...