5 سال تک انجان لڑکے کو بیوی کے سامنے اپنا بیٹا کہتا رہا، چینی شخص کے جھوٹ نے محبت کی لازوال داستان قائم کردی، سن کر آپ کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

5 سال تک انجان لڑکے کو بیوی کے سامنے اپنا بیٹا کہتا رہا، چینی شخص کے جھوٹ نے ...
5 سال تک انجان لڑکے کو بیوی کے سامنے اپنا بیٹا کہتا رہا، چینی شخص کے جھوٹ نے محبت کی لازوال داستان قائم کردی، سن کر آپ کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

  


بیجنگ(نیوز ڈیسک)احساسات و جذبات نا ہوں تو انسان اور حیوان میں فرق ہی کیا ہے۔ محبت وہ پاکیزہ جذبہ ہے جو احساس سے ہی جنم لیتا ہے اور اسی کے سبب انسان سے ایسے خوبصورت افعال سرزد ہوتے ہیں کہ جن کے بارے جان کر آنکھیں نم ہو جاتی ہیں۔ چین سے تعلق رکھنے والا ایک معمر شخص بھی ایک ایسی ہی خوبصورت مثال ہے، جس نے اپنے بیٹے کی وفات کے بعد اپنی بیمار اہلیہ کی خوشی کے لئے ایک اجنبی نوجوان کو ڈھونڈکر اس کی ممتا کی تسکین کر دی۔

میل آن لائن کے مطابق شیا زان ہائی نامی اس شخص کا بیٹا ایک حادثے میں دنیا سے رخصت ہوگیا اور اسی حادثے میں اس کی اہلیہ کی یادداشت متاثر ہو گئی۔ حادثے کے بعد جب اس کی حالت ذرا سنبھلی تو وہ اپنے بیٹے سے ملنے کی خواہش کرنے لگی لیکن اسے یہ نہیں بتایا گیا تھا کہ وہ دنیا سے رخصت ہو گیا ہے۔ شیا کا کہنا ہے کہ ”میں اپنی اہلیہ کو سچ بتانے کی ہمت نہیں کرسکا لیکن وہ اکثر بیٹے سے ملنے کی خواہش کرتی تھی۔ خوش قسمتی سے ایک روز مجھے ایک ایسا چہرہ نظر آ گیا جو ہوبہو میرے بیٹے جیسا تھا۔ بس اسی وقت میں نے سوچ لیا کہ اس نوجوان کو درخواست کروں گا کہ وہ میرے بیوی کے سامنے خود کو ہمارے بیٹے کے طور پر ظاہر کرے۔ مجھے معلوم نہیں تھا کہ یہ کیسے ہو گا، لیکن میں یہ کرنا چاہتا تھا۔“

اس نوجوان کا نام جیانگ جنگوے ہے۔ وہ ایک پولیس اہلکار ہے اور شیا نے 2010ءمیں پہلی مرتبہ اسے ٹی وی پر دیکھا تھا۔ شیا نے ٹی وی پر نظر آنے والے اس نوجوان کی تلاش شروع کردی اور بالآخر اسے ڈھونڈنے میں کامیاب ہوگئے۔ ان کی درد بھری درخواست پر جیانگ نے بھی غیر معمولی ہمدردی کا مظاہرہ کیا اور ان کی اہلیہ کے سامنے خود کو اس کا بیٹا ظاہر کرنے پر رضامند ہوگیا۔

جیانگ کا کہنا ہے کہ جب وہ پہلی بار معمر خاتون کے پاس گئے اور انہیں ماں کہا تو وہ پھوٹ پھوٹ کر رو دیں۔ دماغی کمزوری کے باعث خاتون کے لئے یہ جاننا ممکن نہیں تھا کہ وہ ان کا حقیقی بیٹا نہیں ہے اور ملتی جلتی شکل و صورت کی وجہ سے بھی وہ اسے اپنا بیٹا ہی سمجھیں۔ دکھی ماں سے جیانگ کی پہلی ملاقات کو پانچ سال کا عرصہ گزر گیا ہے لیکن وہ اب باقاعدگی سے انہیں ملنے جاتا ہے۔

جیانگ کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے خود کو دکھی خاتون کے سامنے ان کا بیٹا ظاہر کرنے کا فیصلہ کیا تو ان کی اپنی والدہ اس فیصلے پر کچھ ہچکچاہٹ اور پریشانی میں مبتلا تھیں لیکن ان کے والد نے انہیں حوصلہ دیا۔ انہوں نے بتایا ”میر ااس معمر خاتون سے خون کا رشتہ تو نہیں ہے لیکن قسمت نے ہمیں ماں بیٹا بنادیاہے۔ ہم ایک دوسرے کو دیکھ کر اسی طرح خوشی محسوس کرتے ہیں جس طرح کوئی حقیقی ماں اور بیٹا مل کر خوش ہوتے ہیں۔ وہ جب تک اس دنیا میں ہیں میں انہیں بیٹا بن کر ہی ملتا رہوں گا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی


loading...