آکسفورڈیونیورسٹی کے پر وفیسرو سکالرطارق رمضان پیرس میں زیر حراست

آکسفورڈیونیورسٹی کے پر وفیسرو سکالرطارق رمضان پیرس میں زیر حراست
آکسفورڈیونیورسٹی کے پر وفیسرو سکالرطارق رمضان پیرس میں زیر حراست

  


پیرس(ڈیلی پاکستان آن لائن) پیرس میں آ کسفورڈیونیورسٹی کے پر وفیسرو سکالرطارق رمضان کو گرفتار کر لیا گیا انہیں دو خواتین کی جانب سے زیادتی کے الزام کے بعد حراست میں لیا گیا تاہم انہوں نے ان الزامات کو رد کردیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ان پر الزام لگانے والی ایک خاتون ہینڈا ایاری نے 2016میں اپنی شائع کردہ کتاب میں خود کو زیادتی کا شکار ہونے کا لکھا تھا تاہم اس وقت انہوں نے یہ اقدام اٹھانے والے کا نام نہیں لکھا تھا۔اس کے علاوہ ایک خاتون نے 2009میں بھی اپنے آپ کو طارق رمضان کی طرف سے زیادتی کا نشانہ بنانے کا الزام لگا یا ہے ۔

اس کے قبل چار سوئس خواتین  بھی ان پر جنسی ہراسگی کا الزام لگا چکی  ہیں جب وہ جنیوا میں زیر تعلیم تھیں۔

پر وفیسرو سکالرطارق رمضان نے ان تمام الزامات کی تردید کی ہے ان کا کہناہے کہ ہینڈا ایاری مسلمان مخالف شدت پسند گروہ کی رکن رہ چکی ہیں اور سیکولر فمینسٹ گروپ کی سربراہی کر رہی ہے،ان کا یہ اقدام صرف ان کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...