فلور ملزمان نے ذاتی مفادات کیلئے آٹے کا بحران پیدا کیا:اسلم اقبال

فلور ملزمان نے ذاتی مفادات کیلئے آٹے کا بحران پیدا کیا:اسلم اقبال

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)صوبائی وزیر صنعت وتجارت میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ آٹے کا بحران مصنوعی تھا۔چند فلور ملز مالکان نے ایسوسی ایشن کو استعمال کرتے ہوئے ذاتی مفادات کی خاطرآٹے کا بحران پیدا کیا۔یہ عناصر حکومت سے رعائتی نرخوں پر گندم حاصل کرکے افغانستان بھیجتے رہے ہیں۔سابق دور میں رمضان المبارک کے دوران آٹے پرساڑھے نو ارب روپے کی سبسڈی دی گئی۔عوام سستا آٹا ڈھونڈتے رہے اور یہ عناصر پیسہ بناتے رہے۔ہم نے آٹے پر بلاجواز سبسڈی ختم کرکے غریب قوم کے سوا سات ارب روپے بچائے جس سے آٹا مافیا کو تکلیف ہوئی۔حکومت ان عناصر کے ہاتھوں بلیک میل نہیں ہوگی اور انہیں کسی صورت غریب عوام کی جیب پر ڈاکہ نہیں ڈالنے دیں گے ان خیالات کا اظہارانہوں نے سمن آباد میں کھلی کچہری کے دوران سائلین اور میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔صوبائی وزیر نے تین گھنٹے تک لوگوں کی شکایات سنیں اوربعض مسائل کے حل کے لئے موقع پر احکامات جاری کئے۔میاں اسلم اقبال نے کہا کہ عوام کی خدمت اور ان کے مسائل کا حل ہماری اولین ترجیح ہے۔ وزیراعلی کی ہدایات پر وزراء کی جانب سے کھلی کچہریاں لگائی جارہی ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ آٹے پر سبسڈی کے حوالے سے آٹا مافیا کی چوریاں سامنے آرہی ہیں۔اس آٹا مافیا نے اب میدہ کی قیمت بھی بڑھا دی ہے۔

اشیاء ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے کسی کو من مانی نہیں کرنے دیں گے۔وفاقی اور صوبائی حکومتیں اشیاء ضروریہ کی قیمتوں کی پوری طرح مانیٹرنگ کررہی ہیں۔کسی کو ناجائز منافع خوری نہیں کرنے دیں گے۔صوبائی وزیر نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ن لیگ کے پارلیمینٹرین ان کی کرپشن اور دوغلی پالیسیوں کے باعث ان سے دوری اختیار کررہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ حمزہ شہباز کھڑکیاں دروازے کھلے رکھنے کی بات کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف علاج کے لئے کمٹمنٹ کرکے باہر گئے۔انہیں یہ اپنی کمٹمنٹ پوری کرنی چاہیے۔پنجاب حکومت نے نواز شریف کو خط لکھا ہے جس کا ابھی جواب نہیں آیا۔ہمارے پاس عدالت کا فورم موجود ہے اور حکومت یہ معاملہ کورٹ کے سامنے رکھے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1