شہباز شریف سچے ہوتے تو ڈیوڈ کیخلاف فوری عدالت جاتے، فیاض چوہان

      شہباز شریف سچے ہوتے تو ڈیوڈ کیخلاف فوری عدالت جاتے، فیاض چوہان

  



لاہور (این این آئی) صوبائی وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ دنیا کے سب سے بڑے ڈرامے باز وزیرِ اعلی شہبا ز شریف نے برطانوی جریدے ڈیلی روز کے رپورٹر ڈیوڈ روز کیخلاف کارروائی کیلئے درخواست دیتے وقت بھی عمران خان پر الزام تراشیاں کیں، ڈیوڈ روز نے تو بہت عرصہ پہلے انہیں زلزلہ زدگان کیلئے آنیوالی امداد میں خرد برد کرنے پر کفن چور اور نواز شریف کو قزاق کہا تھا، اگر شہبا ز شریف سچے ہوتے تو اگلے ہی دن ڈیوڈ روز کیخلاف قانونی کاروائی کا آغاز کرتے، ابھی تو انہوں نے صرف درخواست دی ہے، جب کیس کا فیصلہ ہو گا، دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائیگا۔ ان خیالات کا اظہار وزیرِ اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کیا، انکامزید کہنا تھا شریف برادران پر چوہدری شوگر ملز، حدیبیہ پیپر ملز، غریب زلزلہ زدگان کی امدادی رقوم کھانے کیساتھ ساتھ ار بو ں کھربوں کی لوٹ مار اور منی لانڈرنگ کے الزامات ہیں، ان الزامات کا غصہ عمران خان پر مت نکالیں۔ قبل ازیں وزیرِ اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے شہباز شریف اور سردار عثمان بزدار کے بطور وزیرِ اعلی ادوار میں چیف منسٹر سیکریٹریٹ کے اخراجات کا موازنہ کرتے ہوئے بتایا شہباز شریف دور میں سی ایم سیکریٹریٹ میں 450ملازمین اور دو سو کے قریب افسران تعینات تھے جبکہ سردار عثمان بزدار کے دور حکومت کے پہلے سال میں سی ایم سیکریٹریٹ میں 403ملازمین اور 145افسران ہیں۔2017-18 میں شہباز شریف کے دور میں انٹرٹینمنٹ و تحائف کی مد میں 9 کروڑ روپے خرچ کیے گئے جبکہ عثمان بزدار کے دور حکومت کے پہلے سال میں تحائف و مہمان نوا ز ی کی مد میں 5 کروڑ 30 لاکھ روپے خرچ کیے گئے۔ شہباز شریف کے بطور وزیرِ اعلی آخری سال میں پٹرول کی مد میں 3 کروڑ 40 لاکھ روپے جبکہ عثمان بزدار پٹرول کا خرچ دو کروڑ دس لاکھ تک لے کر آئے۔ 2017-18میں گاڑیوں کی مرمت کی مد میں 4 کروڑ 24 لاکھ روپے خرچ کیے گئے جبکہ گزشتہ سال میں دو کروڑ 90 لاکھ روپے خرچ ہوئے۔ کنٹریکٹ ملازمین کی تنخواہوں کی مد میں 2017-18 میں 6 کروڑ 64 لاکھ روپے خرچ کیے گئے تھے اس کے برعکس عثمان بزدار کے دور حکومت کے پہلے سال میں یہ خرچ صرف 19 لاکھ روپے رہا۔ شہباز شریف کے دور میں ڈائریکٹر لیول کے افسران کو منی لانڈرنگ میں استعمال کیا جاتا تھا۔ شہباز شریف کے متعدد کیمپ آفسز کے برعکس عثمان بزدار کا ایک بھی کیمپ آفس نہیں۔ عثمان بزدار نے عمران خان کے ویژن کے مطابق گزشتہ ڈیڑھ سال میں عوام کی خدمت کی ہے۔

فیاض چوہان

مزید : صفحہ اول